Bacho ki pedaish mai waqfa

السلام علیکم مفتی صاحب! میں اور میری بیوی نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم چار سال تک بچہ پیدا نہیں‌ کریں گے، اس کے بارے میں دو سوالات کے جوابات درکار ہیں: کیا اسلام میں اس طرح‌ کرنے کی اجازت ہے؟ حمل نہ ٹھہرانے کا جائز طریقہ کونسا ہے؟

جواب:
آپ نے واضح نہیں کیا کہ آپ لوگ شادی کے بعد پہلا بچہ ہی چار (4) سال تک پیدا نہیں کرنا چاہتے یا ایک بچے کی پیدائش کے بعد چار سال کا وقفہ کرنا چاہتے ہیں؟ اگر شادی کے بعد بلاوجہ پہلا بچہ چار سال تک پیدا نہیں کرنا چاہتے تو یہ نہ صرف شرعی نقطہ نظر سے ناجائز ہے بلکہ کسی طور بھی فائدہ مند نہیں ہے۔
دوسری صورت یہ ہے کہ آپ ایک بچے کی پیدائش کے بعد دوسرا بچہ چار سال بعد پیدا کرنا چاہتے ہیں تو یہ نہ صرف شرعی نقطہ نظر سے جائز ہے بلکہ ماں اور بچے کی صحت کے لیے ضروری بھی ہے۔ اس سے پہلا بچہ مدت رضاعت پوری کر کے چلنے پھرنے کے قابل ہو جائے گا اور آنے والا بچہ بھی صحت مند ہوگا

اس سلسلہ میں ایک ویڈیو بھی نیچے موجود ہے دیکھ کر شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں