ختنہ کس عمر میں کروانی چاہئے

سوال: ختنہ کس عمر میں کروانی چاہئے ؟ بعض لوگ بالکل چھوٹے بچوں کی ختنہ کرواتے ہیں اور بعض لوگ دس گیارہ سال کی عمر میں کرواتے ہیں ۔ ختنہ کروانے کیلئے مناسب عمر کیا ہے ؟ بیان فرمائیں ۔ (جاری ہے) ہ


جواب:
ختنہ کی کم سے کم عمر کی کوئی حد نہیں ۔ بچہ کے تحمل و برداشت پر منحصر ہے ۔ اگر بچہ جسمانی اعتبار سے ختنہ کی تکلیف کو برداشت کرسکتا ہے تو ختنہ کروانا درست ہے ، خواہ بچہ کتنا ہی چھوٹا ہو ۔ اور ختنہ کی انتہائی عمر بارہ سال ہے ، اس کے بعد بچہ مراہق قریب البلوغ شمار کیا جاتا ہے ، اس لئے زیادہ سے زیادہ بارہ سال کی عمر تک ختنہ کروادینا چاہئے ۔ البحر الرائق ج3ص112 میں ہے : وفي الخلاصة وأكثر المشايخ على أنه لا اعتبار للسن فيهما ، وإنما المعتبر الطاقة. ترجمہ: ختنہ میں عمر کا کوئی اعتبار نہیں (جاری ہے) ہ

البتہ بچہ کی قوت برداشت کو ملحوظ رکھا جائے ۔ رد المحتار ج5 ص530 میں ہے : ( قوله وقيل سبع ) ۔ ۔ ۔ وإن كان أصغر منه فحسن ، وإن كان فوق ذلك قليلا فلا بأس به. تکملہ رد المحتار ج1ص58 میں ہے : وآخره اثنتا عشرة . ترجمہ: یہ بھی کہا گیا ہے کہ سات سال کی عمر میں ختنہ کروائی جاسکتی ہے تاہم بچہ اس سے بھی کم عمر ہو تو بہتر ہے اور اگر عمر اس سے کچھ زیادہ ہو تو حرج نہیں اور آخری عمر بارہ سال ہے

کیٹاگری میں : Viral

اپنا تبصرہ بھیجیں