دلچسپ عجیب و غریب : ایٹمی حملے کی صورت میں اگر یہ گولیاں کھا ئی جائیں تو اٹیمی حملے کے دوران اپنی جان بچائی جاسکتی ہے ایک ملک نے اس کی تقسیم شروع کر دی ہے

دنیا میں ایک ایسی چیز بھی ہے کہ جو قیامت خیز ایٹمی حملے کی صورت میں آپ کی جان بچا سکتی ہے، اور یہ چیز ”آیوڈین کی گولی“ ہے۔ بیلجیئم کی حکومت نے اپنے تمام 1کروڑ 10لاکھ عوام کو یہ گولیاں بہم پہنچانے کا فیصلہ کر لیا ہے تاکہ ایٹمی حملے کی صورت میں وہ انہیں کھا کر اپنی جا بچا سکیں۔ یہ اعلان بیلجیئم کے وزیرصحت کی طرف سے کیا گیا ہے۔بنکاک پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق بیلجیئم حکومت کا یہ اقدام ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب اس پر ہمسایہ ملک جرمنی کی طرف سے بارڈر کے قریب واقع اپنے دو نیوکلیئرپاور پلانٹس بند کرنے کے لیے دباﺅ ڈالا جا رہا ہے، کیونکہ جرمن حکومت کو ان پلانٹس کی سکیورٹی کے حوالے سے تحفظات لاحق ہیں۔ (جاری ہے) ہ


رپورٹ کے مطابق آیوڈین کی گولیاں(Iodine pills)انسانوں میں ایٹمی تابکاری کے اثرات کم کرتی ہیں۔ اس سے قبل بیلجیئم حکومت اپنے ان دونوں پلانٹس کے اردگرد20کلومیٹر کے علاقے میںر ہنے والے شہریوں کو یہ گولیاں فراہم کر رہی تھی مگر اب پورے ملک میں تقسیم کی جائیں گی۔ پارلیمنٹ میں خطاب کرتے ہوئے (جاری ہے) ہ

بیلجیئم کے وزیرصحت کا کہنا تھا کہ ”ان گولیوں کی تقسیم کا علاقہ 20کلومیٹر سے بڑھا کر 100کلومیٹر کر دیا گیا ہے اور اسے بتدریج پھیلاتے ہوئے پورے ملک میں لوگوں کو یہ گولیاں فراہم کی جائیں گی۔“رپورٹ کے مطابق وزارت صحت کی طرف سے اس بیان پر تاحال کوئی جواب سامنے نہیں آیا۔

کیٹاگری میں : Viral

اپنا تبصرہ بھیجیں