بیوی کی جنسی خواہشات سے تنگ شوہر انصاف کے لیے عدالت پہنچ گیا

مردانہ کمزوری انسان کی ازدواجی زندگی تباہ کردیتی ہے اور اپنی ضروریات پوری نہ کرسکنے کی وجہ سے ذہنی طورپر بھی پریشانی رہتی ہے لیکن ممبئی کی فیملی کورٹ میں اس وقت نہایت دلچسپ صورتحال پیدا ہوگئی جب زیر سماعت مقدمہ میں شوہر نے پیش ہوکر بیگم کو طلاق دینے کی اجازت مانگ لی۔ (جاری ہے) ہ


شوہر کا کہنا تھا کہ ان کی شادی اپریل 2012ءمیں ہوئی تھی اور تب سے اس کی بیگم اسے جنسی تسکین کے لئے مسلسل ہراساں کررہی ہے۔ شوہرنے الزام لگایا کہ کوشش کے باوجود وہ اپنی بیگم کی جنسی خواہشات ٹھنڈی نہیں کرسکا اور جب بھی وہ مزاحمت کی کوشش کرتا ہے، اس کی بیگم حقارت بھری باتیں کرتی ہے جس کے نتیجے میں بالآخر اسے ہتھیار ڈالنا پڑتے ہیں۔ اس نے یہ الزام بھی لگایا کہ اس کی بیوی اسے زبردستی دوائیاں اور شراب پلاتی ہے تاکہ اس کی جنسی پیاس بھی بڑھائی جاسکے۔ (جاری ہے) ہ

اس کا کہنا تھا کہ وہ تینجگہ نوکری کرتا ہے اوراس میں اپنی بیگم کی خواہشات کی تکمیل کرنے کے لئے دم نہیں، مزید یہ کہ بیگم اسے دھمکی بھی دیتی ہے کہ اگر وہ ناکام رہا تووہ کوئی اور بندوبست کرلے گی-شوہر کا کہنا تھا کہ وہ دو مرتبہ بیمار ہوا جس کے بعد ڈاکٹروں نے اسے مکمل آرام اور جنسی عوامل سے پرہیز کا مشورہ دیا لیکن یہ اس کی بیوی کے لئے قابل قبول نہ تھا۔ اس نے اپنی بیگم کو ماہر نفسیات کے پاس لے جانے کی کوشش بھی کی لیکن کامیابی حاصل نہ ہوسکی اور بالآخر اس نے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا۔ جج نے اس مجبور شخص کی درخواست قبول کرتے ہوئے طلاق کی اجازت دے دی ہے ۔

کیٹاگری میں : Viral

اپنا تبصرہ بھیجیں