ایک دن ایک مشہور آدمی نے سوچا کہ میں ذرا دیکھوں کہ لوگوں میں میر کیا عزت ہے سوچ کر وہ بھیس بدل کر

میں کُلبھوشن یادیو اعترف کرتاہوں کہ میں ہندوستان نیوی کا حاضر سروس افسرہوں اور بطور کمیشنڈ افسر میری ریٹائر منٹ ۲۰۲۲ میں ہوگی ۔میں ہوگی میں نے ۱۹۸۷ میں نیشنل ڈیفنس اکیڈمی اور ۱۹۹۱ میں بھارتی نیوی میں شمولیت اختیار کی جہاں دسمبر ۲۰۰۱ تک فرائض انجام دیئے ۔میں نے ۲۰۰۳ میں انٹیلی جنس آپریشنز کا آغاز کیا اور چاہ بہار (ایران) مین کاروبار کا آغاز کیا میں نے ۲۰۰۴ اور ۲۰۰۵ میں کراچی کے کئی دورے کیے ۔جاری ہے ۔

جن کا مقصد را کے لیے کچھ بنیادی ٹاسک سرانجام دینا تھا ۲۰۱۳ کے آخر میں را کے لیے ذمی داریاں پوری کرنا شروع کیں ۔میں ۲۰۱۶ میں ایران کے راستے بلوچستان میں داخل ہوا اور فنڈنگ لینے والے بلوچ علیحدگی پسندوں سے ملاقاتیں کیں اور گھنائونی کارروائیوں میں ان کی مدد کرتا رہا ۔اگر آپ ہندوستان کو میری گرفتاری کا بتانا چاہتے ہیں تو انہیں خفیہ کوڈ monkey is with us you(آپ کا بندر ہمارے پاس ہے) بتائیں تو وہ سمجھ جائیں گے کہ کون گرفتار ہوا ہے ۔ہندوستان ،پاکستان میں دہشت گردی میں ۔جاری ہے ۔

ملوث ہے اور میری گرفتاری اس بات کا ثبوت ہے ۔ریاستی دہشت گردی کا اس سے بڑا ثبوت کوئی اور نہیں ہوسکتا ۔میں گوادر میں چینی زنجنیئر ز کے ہوٹل پر بم دھما کے اور مہران بیس پر حملے میں ملوث ہوں ۔سی پیک اور گوادر پورٹ  میرے بڑے اہداف تھے میں را کے لیے دہشت گردی کا نیٹ ورک بنانے ،اپنے کارندوں کو فنڈنگ اور اسلحہ مہیا کرنے میں بھی ملوث ہوں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کیٹاگری میں : news

اپنا تبصرہ بھیجیں