بیماریوں کانشانہ بننے کے علاوہ جنسی نے راہ دی کا ایسا خطر ناک نقصان جدید تحقیق میں سامنے آگیا کہ

افزائش نسل کے لئے جنسی عمل کیڑے مکوڑوں سے لے کر انسانوں تک ہر قسم کے جانداروں میں پایا جاتا ہے اور یہ نسلی ارتقاءکا بنیادی ذریعہ ہے۔ یہ قدرت کا وضع کردہ ایسا نظام ہے جس کے تحت دو جانداروں کے ملاپ سے ایک نیا جاندار تخلیق ہوتا ہے، جو اپنے والدین کی جینیاتی خوبیوں کا مجموعہ ہوتا ہے۔ یوں ہر آنے والی نسل بتدریج اپنی پہلی نسلوں سے بہتر ہوتی چلی جاتی ہے۔ اس ضمن میں مذہب بھی خصوصی ہدایات دیتا ہے اور وضاحت سے بتاتا ہے کہ کیوں مخالف اصناف کے لئے جنسی تعلقات کو اخلاقیات کی حدود کے اندر رکھنا ضروری ہے، مگر جدید مغربی معاشرے میں اس کے برعکس مادر پدر آزاد جنسی اختلاط فروغ پاچکا ہے۔ اگرچہ اہل مغرب اپنی شتر بے مہار جنسی آزادی کو تہذیبی ترقی کی علامت قرار دیتے ہیں، لیکن ایک تازہ ترین سائنسی تحقیق نے اس بے حیائی کو نسل انسانی کے لئے سراسر گھاٹے کا سودا قرار دے دیا ہے۔ ۔جاری ہے۔

......
loading...

دی انڈیپینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق سائنسی جریدے Evolution میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جب جانداروں کی کسی نسل میں صرف ایک جوڑے کے اختلاط کی بجائے متعدد افراد کے درمیان آزادانہ جنسی اختلاط شروع ہوجائے تو آنے والی نسلوں میں بہتر جینز کی منتقلی کا عمل سست پڑجاتا ہے۔ سائنسدانوں نے یہ اہم بات مخصوص نسل کے ساحلی پرندوں میں افزائش نسل کے طریقوں کے مطالعے کے بعد دریافت کی ہے۔یہ تحقیق برطانیہ، امریکہ، جرمنی، سویڈن اور مڈگاسکر کے سائنسدانوں نے مشترکہ طور پر کی، جس کے دوران پلوور نسل کے پرندوں کی 79 مختلف آبادیوں سے ڈی این اے کے سیمپل اکٹھے کئے گئے۔ تحقیق کار پروفیسر تامس زیکلی کا کہنا تھا کہ پرندوں کی جن آبادیوں میں آزادانہ جنسی اختلاط کا رویہ پایا جاتا ہے ۔جاری ہے۔

ان میں جینیاتی تنوع ان پرندوں کی نسبت واضح طور پر کم ہے جو صرف جوڑوں کی صورت میں افزائش نسل کرتے ہیں۔ جو پرندے طویل مدت تک ایک ہی ساتھی کے ساتھ اپنی نسل بڑھارہے تھے ان کے بچوں میں جینیاتی تنوع دوسرے گروپ کی نسبت کہیں زیادہ تھا، یعنی وہ عمومی صحت، ماحول سے مطابقت اور دماغی کارکردگی میں دوسرے گروپ کی نسبت واضح طور پر آگے تھے۔پروفیسر تامس کا کہناتھا ” اس تحقیق کے نتائج حیران کن ہیں کیونکہ اس نے سائنسی کمیونٹی میں کئی دہائیوں سے پائے جانے والے نظریات کو بالکل الٹ کر رکھ دیا ہے۔ یہ ایک بڑا انکشاف ہے کہ آزادنہ جنسی اختلاط نسل انسانی کے ارتقاءکے لئے نقصان دہ ہے۔“