شادی کے بعد ایک عرصے تک اولاد نہ ہوئی میاں بیوی ڈاکٹر کے پاس پہنچ گئے ڈاکٹر نے آگے سے ایسا انکشاف کر دیا کہ دونوں کے پیروں تلے واقعی زمین نکل گئی

امریکہ میں ایک میاں بیوی کو بچہ پیدا کرنے میں مشکلات درپیش تھیں جس پر انہوں نے آئی وی ایف(مصنوعی طریقہ¿ افزائش نسل)کے ذریعے بچہ پیدا کرنے کا فیصلہ کیا اور ڈاکٹر کے پاس چلے گئے جہاں ڈاکٹر نے ان کا ڈی این اے ٹیسٹ کرنے کے بعد ایسا انکشاف کر دیا کہ دونوں پر قیامت ٹوٹ پڑی۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈی این اے ٹیسٹ سے انکشاف ہوا کہ وہ دونوں آپس میں نہ صرف بہن بھائی ہیں بلکہ جڑواں بھی ہیں۔ ۔جاری ہے۔


تحقیق کرنے پر معلوم ہوا کہ امریکی ریاست میسیسپی کے رہائشی اس جڑواں بہن بھائی کے ماں باپ بچپن میں ہی فوت ہو گئے تھے جس پر انہیں دو خاندانوں نے گود لے لیا۔ یوں ان دونوں نے الگ الگ پرورش پائی اور نوجوانی میں ان کی ملاقات ہوئی اور انہیں ایک دوسرے سے محبت ہو گئی جس پر انہوں نے شادی کر لی۔ ریاست میسیسپی میں محرم رشتوں کی باہم شادی ممنوع ہے جس پر اب یہ دونوں مخمصے کا شکار ہیں کہ اب کیا کریں۔ ۔جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق ان دونوں کے والدین کی موت کارحادثے میں ہوئی تھی اور انہیں گود لینے والے جوڑوں نے کبھی ان دونوں کو ان کے جڑواں بھائی یا بہن کے متعلق نہیں بتایا تھا۔ ان دونوں کی ملاقات کالج میں ہوئی جہاں یہ دونوں ایک ساتھ پڑھتے تھے۔ یہ ملاقات محبت میں تبدیل ہوئی اور دونوں نے شادی کر لی۔ ان کا ڈی این اے کرنے والے ڈاکٹر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ۔جاری ہے۔

”یہ دونوں جڑواں بہن بھائی ہونے کی وجہ سے ہی ملاقات ہونے پر ایک دوسرے کی طرف راغب ہوئے اور انہیں باہم محبت ہوئی۔ اگر انہیں حقیقت معلوم ہوتی تو یہ اس تکلیف سے بچ سکتے تھے جو اب انہیں برداشت کرنی پڑ رہی ہے۔“

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

اپنا تبصرہ بھیجیں