ایک وفعہ کا ذکر ہے کہ مجھے گنے کا جوس بہت پسند تھا اور میں نے گنے والے سے کہا میرے دوست بن جائو اور مجھے مفت میں جوس پلایا کرو تو جب میں سٹار بن جائوں گا تو تمہیں گنے کے جوس کی مشین خرید کر دوں گا اس نے مجھے وہاں سے بھگا دیا لیکن پھر ہماری دوستی ہوگئی

قومی ٹیم کے سابق فاسٹ باولر شعیب اختر نے اپنے ماضی کا دل کو چھو لینے والا واقعہ سنا دیاہے۔تفصیلات کے مطابق شعیب اختر کا کہناتھا کہ وہ جب پنڈی کلب میں بھاگتے تھے اور وہاں سے نکلتے تھے تو راستے میں ایک گنے کے جوس والا ہوتا تھا ،اس وقت مجھے گنے کا جوس بہت پسند تھا ،۔جاری ہے ۔

......
loading...

میں نے اسے کہا کہ تم میرے دوست بن جاﺅ اور مجھے مفت میں جوس پلایا کرو تو جب میں سٹار بن جاﺅں گا تو تمہیں گنے کے جوس کی مشین خرید کر دوں گا ۔شعیب اختر کا کہنا تھا کہ اس وقت اس نے مجھے وہاں سے بھگا دیا لیکن دو یا تین دن بعد اس نے مجھ سے پوچھا کہ کیا تمہیں یقین ہے کہ تم سٹار بن جاﺅ گے ۔میں نے طارق سے کہا کہ میری آنکھوں یہ آگ دیکھو میں سٹار ضرور بنوں گا ۔جاری ہے ۔

۔شعیب اختر کا کہناتھا کہ پھر آہستہ آہستہ ہماری دوستی ہو گئی اور اس نے مجھے ڈیڑھ سال مفت میں گنے کا جوس پلایا پھر جب میں سٹار بن کر واپس آیا تو مجھے پتہ چلا کہ اس کی وفات ہو چکی ہے تو پھر میں اس کے گھروالوں سے ملا اور کہا کہ اب گنے کے جوس کی مشین نہیں بلکہ دکان بنا کر دوں گا اور پھر سارا کچھ کیا۔