ایک آدمی رات کو اکیلے سڑک پر جا رہا تھا اور بہت پریشان تھا۔ راستے میں اس کو ایک سادھو نظر آیا۔ اس نے ایک لمبا سا چغہ پہنا ہوا تھا اور اس کی بہت لمبی سی داڑھی تھی۔ وہ آدمی بہت خوش ہوا اور اس سادھو سے بولا کہ مجھے راستہ دکھاؤ میں بہت مایوس ہوں۔مجھے کچھ سمجھ نہیںآتا کہ میں کیا کروں۔ مجھے کامیابی کی راہ دکھاؤ۔سادھو کچھ نہ بولا اور

ایک آدمی رات کو اکیلے سڑک پر جا رہا تھا اور بہت پریشان تھا۔ راستے میں اس کو ایک سادھو نظر آیا۔ اس نے ایک لمبا سا چغہ پہنا ہوا تھا اور اس کی بہت لمبی سی داڑھی تھی۔ وہ آدمی بہت خوش ہوا اور اس سادھو سے بولا کہ مجھے راستہ دکھاؤ میں بہت مایوس ہوں۔مجھے کچھ سمجھ نہیںآتا کہ میں کیا کروں۔ مجھے کامیابی کی راہ دکھاؤ۔سادھو کچھ نہ بولا اور اس نے دائیں طرف اشارہ کیا۔وہ آدمی جلدی سے اس طرف بھاگنے لگا۔ جب وہ آدھے راستے تک پہنچا تو سامنے ایک گڑھا تھا ۔وہ اندھا دھند رہا تھا۔اس نے اندھیرے میں گڑھا وقت پر نہیں دیکھا اور منہ کے بل اس میں جا گرا۔باہر نکلا تو سارے کپڑے میلے ہو چکے تھے اور اس کو کافی خراشیںآئی تھیں۔۔جاری ہے۔


وہ لڑکھڑاتا ہوا واپس سادھو کے پاس پہنچا اور بولا کہ ادھر تو ایک کھڈا تھا اور میں گر گیا تھا۔مجھے کامیابی کا صحیح راستہ بتاؤ۔سادھو نے پھر دائیں طرف اشارہ کیا۔ اس شخص نے غور کیا اور اب تھوڑا اور دائیں جانب ایک اور سڑک پر بھاگا۔وہ آدھے راستے میں پہنچا تھا کہ آگے پھر ایک کھائی آگئی ۔اس دفعہ کھائی پہلے سے بہت بڑی تھی۔وہ زور سے اندر گرا اور خون و خون ہو گیا۔ اس کا درد کے مارے برا حال تھا اور اسے سادھو پر بہت غصہ آرہا تھا۔ وہ بمشکل اس کھائی سے ٹخنے رگڑ رگڑ کر باہر نکلا اور خود کو گھسیٹ کر واپس اسی جگہ پہنچا جہاں اسے سادھو ملا تھا۔سادھو کو دیکھتے ہی وہ برس پڑاکہ آپ نے مجھے غلط راستہ کیوں دکھایا۔میری حالت دیکھیں میں کتنا ذخمی ہو گیا ہوں ۔۔جاری ہے۔

......
loading...

مجھے سچ بتائیں کہ مجھے کس طرف کامیابی ملے گی۔سادھو نے ایک بار پھر دائیں طرف اشارہ کیا تو وہ آدمی طیش میں حواس باختہ ہو گیا اور زور زور سے چلانے لگا کہ اپنے منہ سے بولو۔بولتے کیوں نہیں ہو کس طرف؟ میری حالت دیکھو۔ سادھو نے بولا کہ تم دونوں دفعہ بالکل ٹھیک سمت میں گئے تھے اور دونوں راستوں پرمشکل آنی تھی۔ اب جدھر جانا ہے جاؤ۔یاد رکھو کہ پھر سے کھائی آئے گی اور تم اس سے بچ کر آگے نکلو۔کھائی کے فوراً بعد ہی تمہیں کامیابی مل جائے گی۔ تم بار بار آگے جانے کے بجائے واپس لوٹ آتے ہو۔ حاصل سبق جب سب کچھ بیڑا غرق ہو جائے تو سمجھ جاؤ کہ حوصلہ نہیں ہارنا کیونکہ جب سب کچھ بالکل تاریک ہو جائے تو ہی آگے بڑھنا لازمی ہو جاتا ہے۔ چلتے رہو۔ جو روز کا معمول ہے اس پر لگے ر ہو چاہے۔جاری ہے۔


حالات اتنے خراب ہوں کہ تمہیں لگے کہ اب تم بستر سے اٹھ بھی نہیں سکتے۔کیونکہ یہ سچ ہے کہ ہر اندھیری رات کے آخر میں سویرا ہے۔ ہر اچھے برے وقت کو ختم ہونا ہے۔ کسی غم یا خوشی، کسی رشتے ناتے، کسی شے کو دوام نہیں ہے۔ سب فانی ہے اور ہر چیز کا ایک وقت مقرر ہے۔ جب سب کچھ اندھیر ہو جائے تو سمجھ جاؤ کہ ہمت ہار دی تو آگے کچھ نہیں ہے لیکن اگر روز کے معمولات جاری رکھے اور خدا سے اچھا گمان رکھا تو سب سے بڑی ناکامی کے فوراً بعد ہی تم اپنی منزل پر پہنچ جاؤ گے۔بس کبھی رکنا نہیں۔