نئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے بارے میں ایسی باتیں جو آپ نہیں جانتے

مسلم لیگ (ن)کے قائد محمد نوازشریف نے عبوری وزیراعظم کیلئے شاہد خاقان عباسی کو نامزد کر دیا ہے،جس کی پارلیمانی پارٹی نے باقاعدہ توثیق بھی کردی ہے۔۔جاری ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ن لیگ کے قائد نوازشریف کی زیرصدارت پنجاب ہاؤس میں عبوری وزیراعظم اور آئندہ کے مستقل وزیراعظم کے ناموں کوحتمی شکل دینے کیلئے مشاورتی اجلاس ہوا۔اجلاس میں وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کو مستقل وزیراعظم جبکہ شاہد خاقان عباسی کوعبوری وزیراعظم بنانے پراتفاق کیاگیا۔۔جاری ہے ۔

 

ن لیگ کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں مستقل وزیراعظم کیلئے شہبازشریف اور عبوری وزیراعظم کیلئے شاہد خاقان عباسی کے نام کی توثیق کی گئی۔شاہد خاقان عباسی 45روزکے کیلئے عبوری وزیراعظم کے طورپرحکومتی ذمہ داریاں نبھائیں گے۔۔جاری ہے ۔


بعد ازاں ضمنی الیکشن میں شہبازشریف کوقومی اسمبلی کی نشست پرالیکشن لڑواکرآئندہ حکومتی مدت کیلئے باقاعدہ وزیراعظم منتخب کیاجائے گا۔شاہد خاقان عباسی مسلم لیگ ن کے پرانے رہنماء ہیں۔12اکتوبر 1999ء کو جب پرویزمشرف نے مارشل لاء لگاکرنوازشریف کی حکومت کاتختہ الٹ دیا۔جاری ہے ۔

اور ن لیگی رہنماؤں پردباؤڈال کروفاداریاں تبدیل کروائی گئیں۔تب بھی شاہد خاقان عباسی نوازشریف کاساتھ نہ چھوڑنے کے اپنے اصولی مئوقف پرڈٹے رہے ۔شاہد عباسی ن لیگ کے قائد نوازشریف کے قریبی ساتھی ہونے ساتھ جیل کے بھی ساتھی ہیں۔۔جاری ہے ۔

رکن قومی اسمبلی شاہد خاقان عباسی 27دسمبر1958ء کوپاکستان کے خوبصورت سردمقام مری میں پیداہوئے۔شاہد خاقان عباسی نے ابتدائی تعلیم لارنس کالج مری میں حاصل کی۔جبکہ جارج واشنگٹن یونیورسٹی سے الیکٹریکل انجینئرنگ میں ماسٹرکی ڈگری کی۔شاہد خاقان عباسی امریکہ اور سعودی عرب کی نجی کمپنیوں میں بھی ملازمت کرتے رہے۔۔جاری ہے ۔

......
loading...


تاہم شاہد خاقان عباسی کاروباری شخصیت اور ایئربلیوکمپنی کے مالک بھی ہیں۔ اسی طرح شاہد خاقان عباسی کاخاندان مسلم لیگ سے وابستہ رہاہے۔اپنے والدخاقان عباسی کی وفات کے بعد1988ء میں مری میں اپنے آبائی حلقے این اے 50راولپنڈی سے آزادحیثیت میں ا لیکشن جیت کر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے اور اپنے سیاسی سفرکاباقاعدہ آغازکیا۔۔جاری ہے ۔

اسی طرح 1990ء میں نوازشریف کے اسلامی جمہوری تحاد( آئی جے آئی)کے پلیٹ فارم سے الیکشن جیتا۔۔جاری ہے ۔


جبکہ 1993ء اور 1997 ء میں مسلم لیگ ن کے پلیٹ فارم سے الیکشن جیت کرایم این اے منتخب ہوئے۔۔جاری ہے ۔

تاہم ڈکٹیٹرپرویز مشرف کے دورمیں 2002ء کے عام انتخابات میں پہلی بارالیکشن پیپلزپارٹی کے امیدوارسے الیکشن ہارا۔نوازشریف کے دوسرے دورحکومت 1997ء میں پی آئی اے کاچیئرمین بنایاگیا۔عام انتخابات 2008ء اور 2013ء میں بھی انتخابات جیتے۔نوازشریف کے موجودہ دورحکومت میں شاہدخاقان عباسی کے پاس وفاقی وزارت پٹرولیم کاقلمدان ہے۔جاری ہے ۔

۔لیکن سپریم کورٹ کی جانب سے نوازشریف صادق اور امین نہ رہنے پرنااہل قراردے دیاگیاہے۔۔جاری ہے ۔

جس کے ساتھ ہی کابینہ بھی تحلیل ہوگئی ہے،تاہم اب عبوری وزیراعظم کیلئے شاہد خاقان عباسی کونامزدکیاگیاہے۔

 

 مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔