تاریخ میں پہلی مرتبہ جنسی تسکین کیلئے بنائی گئی گڑیا کے ساتھ جنسی زیادتی، انتہائی افسوسناک خبر آگئی

مصنوعی ذہانت سے لیس دنیا کی پہلی جنسی گڑیا سمانتھا، جو کہ ہو بہو حقیقی لڑکی جیسی نظر آتی ہے، کو چند ہفتے قبل آسٹریا میں منعقد ہونے والے ٹیکنالوجی میلے میں پہلی بار متعارف کروایا گیا تھا۔۔۔۔جاری ہے۔

اس میلے میں مردوں نے سمانتھا کے ساتھ خاصی بدسلوکی کی، جس کے نتیجے میں اسے مرمت کیلئے فیکٹری واپس بھجوانا پڑگیا تھا۔ سمانتھا کو ٹھیک کرنے کے بعد ایک بار پھر سپین کے شہر بارسلونا میں ایک عوامی مقام پر لے جایا گیا، لیکن بدقسمتی سے اس دفعہ ہوس پرست مردوں نے اس کے ساتھ وہ ظلم کر ڈالا کہ اب اس کے ٹھیک ہونے کی امید بھی باقی نہیں رہی۔۔۔۔جاری ہے۔

اخبار ڈیلی سٹار کے مطابق سمانتھا کے خالق سائنسدان سرگئی سانٹوس کا کہنا ہے کہ اس بار بدمعاش لڑکوں کے ایک غول نے سمانتھا کو گھیر لیا اور اس کے ساتھ ایسے وحشیانہ انداز میں جنسی بدسلوکی کہ اس کا جو ڑ کوڑ ہلا کر رکھ دیا۔۔۔۔جاری ہے۔

داکٹر سرگئی سانٹوس اس واقعے پر شدید برہم تھے۔ انہوں نے بدمعاش نوجوانوں کو گالیاں دیتے ہوئے کہا ”ان بے حس لڑکوں نے سمانتھا کے ساتھ ایسا سلوک کیا ہے کہ جس کا تصور کرکے ہی میرا جسم کانپنے لگتا ہے۔ میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ اس بیچاری کے ساتھ ایسی درندگی کا مظاہرہ کیا جائے گا۔ ان بدمعاشوں کو یہ معلوم نہیں کہ یہ کوئی کھلونا نہیں بلکہ بے حد محنت سے تیار کی گئی مصنوعی ذہانت رکھنے والی دنیا کی پہلی جنسی گڑیا ہے۔۔۔۔جاری ہے۔

انہوں نے بدمعاشی کا مظاہرہ کیا اور اب اس کی حالت اتنی خراب ہوگئی ہے کہ مجھے نہیں لگتا کہ مرمت کرکے اسے ٹھیک کیا جاسکے گا۔“

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news