ملالہ کو بھی مغربی رنگ چڑھ گیا سوشل میڈیا پرایسی تصویر شیئر ہوگئی کہ پاکستانیوں نے غصے میں لال ہوکر درگت بنا ڈالی دیکھ کر آپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

سوات کی بھولی بھالی لڑکی دہشتگردوں کی فائرنگ سے زخمی ہوکر علاج کیلئے برطانیہ چلی گئی اور پھر وہیں اپنی تعلیم جاری کی۔ اس تمام عرصے کے دوران وہ کئی تقریبات میں نظر آئیں اور انہیں نوبل انعام سے بھی نوازا گیا۔ مگر یہ ملالہ جہاں بھی گئی پاکستان کا روائتی لباس زیب تن کئے ہی نظر آئی۔۔۔۔جاری ہے۔

لیکنآکسفورڈ یونیورسٹی میں داخلے کے بعد سوشل میڈیا پر ان کی ایک تصویر وائرل ہوگئی جس میں وہ مغربی لباس زیب تن کیے ہوئے ہیں، اس تصویر کو دیکھ کر پاکستانی سوشل میڈیا صارفین نے تنقید شروع کردی۔ایک ٹوئٹر صارف اعجاز آفتاب نے یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا ”ملالہ یوسف زئی برطانیہ میں۔۔۔ شرم کرو ملالہ۔“۔۔۔جاری ہے۔

ابوبکر کا کہنا تھا ”ہماری معصوم ملالہ آکسفورڈ یونیورسٹی جاتے ہوئے۔۔۔ سادگی اپنے عروج پر!!! سٹائل آ گیا۔۔ دیکھو ذرا۔“موہین نبیل نے لکھا ”یہ ہیں مس ملالہ“کچھ لوگ تو شاید یہ تصویر دیکھ کر پہلی نظر میں دھوکہ کھا گئے یا پھر تنقید کرتے ہوئے نیا ٹوئیسٹ دینے کی کوشش کی، جیسا کہ ’طوفانی‘ نامی صارف نے لکھا ”ملالہ خلیفہ“۔۔۔جاری ہے۔

آصف نے لکھا ”ملالہ یوسف زئی لندن میں شاپنگ کرتے ہوئے۔ سوچو پاکستانیو۔۔۔ سب ٹوپی ڈرامہ چل رہا ہے۔“رانا انور نے تو صرف ایک جملے میں ہی طنز کے تیر برسا دئیے اور لکھا ”میں ہوں ملالہ“طلحہ منیرنے لکھا ”ہیلو ملالہ۔۔۔! اگر آپ پاکستان میں خواتین کیلئے ایسی آزادی چاہتی ہیں، تو پھر طالبان نے آپ کو گولی مار کر بالکل ٹھیک کیا تھا۔“

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news