شلوار اتاری تو ایک ہی دن میں پروموشن مل گئی پاکستانی لڑکی کی سچی کہانی

دوستوہوسکتاہے یہ کہانی آپ کوبری لگے لیکن اس کہانی کے پس منظرمیں جوحقیقت بیان کی گئی ہے وہ معاشرے میں ناسورکی طرح پھیل رہی ہے۔میں نے لمبی سانسیں بھرتے ہوئے نکی کوچھوڑااورسائیڈ پرصوفے کے اوپربیٹھتے ہوئے سگریٹ سلگایااورکش لینے لگا۔نکی بھی اپنے با ل سمیٹتی ہوئی میرے قریب آکربیٹھ گئی میری پینٹ ابھی تک نیچے ہی تھی۔جاری ہے۔

لیکن میں نےاپناانڈروئیراوپرکرلیاتھا۔نکی میری ننگی رانوں پرہاتھ پھیرنے لگی اورچمکارتے ہوئے مجھے بولی ـ’’سراب میں جائوں‘‘میں نے نکی کے چہرے کے تاثرات دیکھے مجھے اس کے چہرے پرخوشی کی بجائے اداسی اورپریشانی کے آثاردکھائی دیے۔نکی سانولی رنگت کی مالک تھی لیکن اس کاسانولاچہرہ نہایت ہی پرکشش تھا۔میں نے چہرے کے نیچے دیکھااس کے سفیدرنگ کے بریزئیرکے دوبٹن کھلے ہوئے تھے اورصرف ایک بٹن ہی بندتھا۔آدھے سے زیادہ کھلے بریزئیرمیں سے کی چھاتیاں صاف دکھائی دے رہی تھیں جوکہ نہایت شاندارمحسوس ہورہی تھیں ۔بریزئیرسے نیچے پیٹ ننگاتھااورجب میرادھیان اس کی ۔جاری ہے۔

شلوارپرپڑاتوجلدی جلدی میں اس نےشلوارالٹی پہن رکھی تھی۔اس نے پھرمجھ سے پوچھا’’سراب میری پروموشن ہوجائے گی نا؟‘‘دراصل نکی میرے جونیئرسٹاف کی ممبرتھی اورچنددن پہلے ہی اس نے مجھ سے گزارش کی تھی کہ اس کے گھرکے حالات اچھے نہیں اورموجودہ تنخواہ میں اس کاگزارہ نہیں ہوپارہا۔لہٰذااس کی پروموشن کی جائے تاکہ اس کی تنخواہ میں اضافہ ہوسکے ۔میں نے اسے کہاتھاکہ پروموشن کے لیے تھوڑی سی قربانی دینی پڑتی ہے ۔اس کے پوچھنے پرمیں نے بتایاکہ تم لڑکی ہواورخوبصورت ہوتمہاری پروموشن توبہت جلدہوسکتی ہے۔بس تمہیں کچھ وقت میرے ساتھ گزارناہوگااورساتھ ہی میں نے آنکھ سے اشارہ بھی کردیاتھا۔وہ میرے اشارے کوسمجھ گئی اورآج اس نے وہی قربانی دی تھی۔میں انہی سوچوں میں گم سگریٹ کے کش لگارہاتھاجب نکی کی آوازپھرسے میری سماعت سے ٹکرائی ’’سرآپ خوش توہیں نا؟‘‘میں نے آپ کوخوش کرنے میں کوئی کسرتونہیں چھوڑ دی ۔اس کی یہ بات سن کرمیں چونکااورسیدھاہوکربیٹھتے ہوئے میں نے اپنی پینٹ اوپرکی ،بیلٹ بندکیااورگویاخیالوں کی دنیاسے نکل کرواپس اصل دنیامیں آگیامیں نے نکی کے گالوں اورسینے پرہاتھ پھیرتے ہوئے پیارسے اسے کہاکہ تم نے مجھے بہت خوش کیاہے اب تمہاری پروموشن بالکل پکی ہے ۔کل تمہیں تمہاراپروموشن لیٹرمل جائے گا۔اب تم جائواورہاں جانے سے پہلے اپنی شلوارسیدھی کرلینا۔یہ کہہ کرمیں نے ایک قہقہہ لگایااورسگریٹ کابچاہواحصہ ایش ٹرے میںمسلتے ہوئے اپنے دفترسے باہرنکل آیا۔باہرڈرائیورگاڑی میں بیٹھامیرانتظارکررہاتھا۔میں تیز تیز چلتے ہوئے گاڑی کے پاس ۔جاری ہے۔

......
loading...

پہنچا،ڈرائیورنے جھٹ سے دروازہ کھولااورمیں اندربیٹھ گیا۔میری جلدی کی وجہ یہ تھی کہ میں نے راستے میں سے اپنی بیوی کوبھی اس کے دفترسے لیناتھا۔میری بیوی بھی ایک کال سنٹرمیں جاب کرتی تھی اورمیں اپنے آفس سے واپسی پراسے ساتھ لے کرہی جایاکرتاتھا۔اس کے دفترکے سامنے گاڑی رو ک کرمیںنے اپنے موبائل سے اپنی بیوی کوایک مسڈ کال دی تاکہ اسے پتاچل جائے کہ میں باہرپہنچ گیاہوں ،تھوڑی دیرمیں میری بیوی مجھے سامنے آتی ہوئی دکھائی دی ۔آتے ہی گاڑی میں بیٹھ گئی اورچہرے سے کافی خوش دکھائی دے رہی تھی ۔میں نے اس کی خوشی کی وجہ پوچھی تواس نے ایک لفافہ میری طرف بڑھاتے ہوئے مجھے بتایاکہ میراپروموشن ہوگیاہے۔آج سے میرے صاحب نے میری پروموشن کردی ہے اورپورے دس ہزارروپے میری تنخواہ میں اضافہ ہوگیاہے ۔ ۔جاری ہے۔

میں نے اس کاپروموشن لیٹرپکڑااورایک لمحے کے لیے خوش ہوگیالیکن اچانک مجھے کچھ یادآیااورمیں نے اس کی شلوارکی طرف دیکھااورپھرمیرے ہوش ا ڑ گئے ۔کیونکہ میر ی بیوی نےبھی شلوارالٹی پہن رکھی تھی ۔میں نے فوراًاپنی بیوی کےچہرے کی طرف نظردوڑائی تومعلوم ہواکہ اس کی مصنوعی خوشی کے پیچھے اداسی اورپریشانی کے بالکل وہی تاثرات چھپے ہوئے تھے جومیں نے نکی کی مجبوری سے فائدہ اٹھانے کے بعدنکی کے چہرے پردیکھے تھے ۔صاف ظاہرتھاکہ میری بیوی کوجوپروموشن ملی تھی وہ بالکل ویسے ہی ملی تھی جیسے میں نے نکی کودی تھی ،فرق صرف اتناتھاکہ میں نے نکی کوشلوارسیدھی کرنے کے لیے کہہ دیاتھا

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔