پاکستانی ڈاکٹر کی امریکی عورت سے شادی کرکے دھوکہ ، ایسا کام کہ دنیا بھر نے لعنت کردی

امریکا میں مقیم ایک پاکستانی نژاد ڈاکٹر نے سفاکیت کی انتہاءکر دی۔ اپنی حاملہ گرل فرینڈ کی چائے میں دھوکے سے مانع حمل گولیاں ڈال کر اس کا چار ماہ کا حمل ضائع کر دیا ۔

 

 

ویب سائٹ ’ورلڈ وائرڈ ویڈ نیوز‘ کے مطابق 37 سالہ خاتون بروک ایفتھ ، جس کا تعلق نیو یارک سے ہے ، کا کہنا ہے کہ گزشتہ تین سال سے ڈاکٹر سکندر عمران کے ان کے ساتھ تعلقات تھے۔ کچھ عرصہ قبل جب وہ حاملہ ہو گئیں تو ڈاکٹر سکندر اس بات سے خوش نہیں تھا اور انہیں اسقاط حمل کروانے کو کہہ رہا تھا ۔ ایفتھ کا کہنا ہے کہ وہ چار ماہ کی حاملہ تھیں اور اسقاط پر تیار نہیں تھیں۔ ایک روز وہ ڈاکٹر سکندر کے ساتھ اس معاملے پر بات چیت کر رہی تھیں

 

 

کہ وہ اولاد کی خواہشمند ہیں اور اپنے بچے کی پرورش کے خواب دیکھ رہی ہیں، لیکن اس کا ذہن کچھ اور ہی منصوبہ بنا چکا تھا۔ اس نے چائے میں مانع حمل گولیاں پیش کر ڈال دیں اور یہ چائے ایفتھ کو پلا دی۔ ایفتھ کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے چائے ختم کی تو کپ کے پیندے میں پاﺅڈر نما چیز تھی لیکن انہیں معلوم نہیں تھا کہ یہ مانع حمل گولیوں کا پاﺅڈر تھا۔ یہ چائے پینے کے کچھ گھنٹے بعد ہی ان کے پیٹ میں شدید درد اٹھا اور ان کا حمل ضائع ہو گیا ۔

......
loading...

 

بعدازاں ہسپتال میں ان کا معائنہ کیا گیا تو پتہ چلاکہ انہیں چائے میں میسو پروسٹول نامی مانع حمل گولی ڈال کر کھلائی گئی تھی ۔ ورجینیا ہسپتال سینٹر کی ایک نرس کا کہنا تھا کہ زچگی کا عمل شروع کرنے کے لئے اس گولی کی معمولی مقدار ہی کافی ہوتی ہے لیکن ایفتھ کی چائے میں اس سے کئی گنا زیادہ مقدار ملائی گئی تھی۔

 

دھوکے بازی سے خاتون کا حمل ضائع کروانے پر ڈاکٹر سکندر کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور اس کے خلاف قانونی کارروائی جاری ہے ۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔