’اس کے بچے کی قبر کھود کر لاش نکالو‘ عدالت نے ریپ کا نشانہ بننے والی 14سالہ لڑکی کے مردہ بچے کی قبر کھودنے کا حکم دے دیا کیونکہ۔۔۔

بھارت میں خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی معمول کی بات بن چکی ہے، جہاں لڑکیوں کے ہاں زیادتی کے نتیجے میں ناجائز اولاد کے جنم لینے کے واقعات بھی اکثر پیش آتے رہتے ہیں۔اب عدالت نے ایک ایسی ہی بچی کی قبرکشائی کا حکم دے دیا ہے۔۔جاری ہے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق رواں سال اکتوبر میں اس بچی کو ایک 14سالہ لڑکی نے جنم دیا، تاہم بچی چند دن بعد ہی انتقال کر گئی اور اسے دفن کر دیا گیا۔پولیس کی تحقیقات میں لڑکی نے ایک کاروباری شخص پر الزام عائد کیا کہ وہ اسے کئی ماہ تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا ہے، تاہم اس شخص کی طرف سے اس الزام کی تردید کر دی گئی ہے۔ اب عدالت نے متوفی بچی کی قبر کھول کر اس کا ڈی این اے ٹیسٹ کرنے کا حکم دے دیا ہے۔جاری ہے۔

تاکہ لڑکی کے الزام کی حقیقت معلوم ہو سکے۔رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کا ہے جہاں مبینہ ملزم پولیس کی حراست میں ہے اور اس کے خلاف کم سن لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے الزام میں مقدمہ درج کیا جا چکا ہے۔ واضح رہے کہ بھارت خواتین کے ساتھ جنسی زیادتیوں کے حوالے سے دنیا میں سرفہرست ہے۔ خود بھارتی حکومت کے اعدادوشمار کے مطابق 2016ءمیں 36ہزار لڑکیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کی گئی،۔جاری ہے۔

تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ اصل تعداد اس سے کہیں زیادہ ہے کیونکہ متاثرہ لڑکیوں کی اکثریت پولیس کو اس کی رپورٹ ہی نہیں کرتی

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news