وہ لمحہ جب پرویز مشرف خود ہیلی کاپٹر لیکر بھارت میں گیارہ کلومیٹرتک اندر گھس کر سینہ تان کر کھڑا ہوگیا اور حُب الوطنی کی لازوال داستان

پاک فوج کے افسران اور جوانوں نے بھارت کے خلاف مختلف ادوار اور مختلف محاذوں پر چھڑنے والی جنگوں میں شجاعت ، دلیری اور سرفروشی کے ایسے ایسے جوہر دکھائے کہ دشمن آج بھی اس بے جگری اور جوانمردی کا معترف ہے. ایسی ایک ایک مثالی اور ناقابل فراموش داستان کارگل کی جنگ میں بھی رقم کی گئی .۔۔جاری ہے

پاک فوج کے ایک سابق افسر لیفٹیننٹ جنرل (ر)شاہد عزیز نے انکشاف کیا ہے کہ کارگل لڑائی کے دوران البدر کے نام سے آپریشن کیا گیا تھا جس کے تحت بھارت کی سیاچن تک رسائی کےلئے سپلائی لائن کو کاٹ دیا گیا .قریب تھا کہ بھارتی فوج کی سیاچن تک رسائی بالکل ہی ختم ہوجاتی .اس خفیہ آپریشن کی معلومات پاک فوج کےصرف چار جرنیلوں کو تھیں جن کی قیادت سابق آرمی چیف جنرل پرویز مشرف کررہے تھے.کرنل (ر) اشفاق حسین نے اپنی کتاب میں لکھا ہے۔۔جاری ہے

......
loading...

کہ کارگل جنگ کے دوران آرمی چیف جنرل پرویز مشرف ایک فوجی ہیلی کاپٹر پر سوار ہو کر 11کلومیٹر تک بھارتی زیرتسلط علاقے میں گئے اور وہاں موجود پاک فوج کے جوانوں کے ساتھ ایک رات گزاری.اس پر بھارتی فوج کے کیپٹن (ر) بھرت ورما نے ایک غیر ملکی خبر ایجنسی کو انٹرویو میں سٹپٹاتے ہوئے کہا تھا کہ دشمن ملک کاآرمی چیف بھارتی سرزمین کے 11کلومیٹر کے اندر گھس آیا .اس سے بڑھ کر بھارتی انٹیلی جنس کی ناکامی کیا ہوگی؟۔۔جاری ہے

بھارتی ٹی وی کو اے این آئی کو اپنے انٹرویو میں سابق آرمی چیف جنرل پرویز مشرف نے کہا تھا کہ نوازشریف امریکہ سے معاہدہ کرکے جنگ بندی نہ کرتے تو بھارت کا 300مربع کلومیٹر کا علاقہ آج ہمارے پاس ہوتا.

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔