صبح دُلہن ہلاک ہو جائے گی اور صبح یہ خوش کی محفل ماتم کدے میں تبدیل ہوجائے گی

اللہ کے برگزیدہ بنی حضرت عیسی علیہ السلام اپنے حواریوں کے ساتھ ایک سفر پر جا رہے تھے کہ اپ کا گزر ایک ایسے گھر کے سامنے سے ہوا جہاں سے ڈھول بچانے کی آواز آرہی تھیں کوئی شادی بیاہ کا موقع تھا ۔جاری ہے ۔

حضرت عیسی علیہ السلام نے اپنے حواریوں سے ارشاد فرمایا یہاں آج کی رات شادی کی خوشیاں منائی جا رہی ہیں کل یہ خوشی کی محفل غم میں بدل جائے گی کیونکہ آج ہی رات دلہن کی موت ہوجائے گی یہ رات گزر گئی اور دوسرے دن صبح حضرت عیسی علیہ السلام پھر اپنے حواریوں کے ساتھ اسی راستے سے واپسی ہوئی مگر اس گھر سے کسی قسم کئ رونے پیٹنے کی آوازیں نہیں سنائی دے رہی تھی حضرت عیسی علیہ السلام کے حواریوں نے گھر والوں سے معلوم کیا کیا گزشتہ رات کو کوئی واقعہ پیش آیا تھا گھر والوں نے جواب دیا نہیں حضرت عیسی علیہ السلام نے گھر کے مالک سے اجازت طلب کی اور دلہن کے کمرے میں داخل ہوئے دلہن کا بستر پلٹا تو اس کے نیچے ایک بہت بڑا ناگ چھپا ہوا تھا دراصل اسی ناگ کو پچھلی رات دلہن کو ڈس لینے کا حکم ہوا تھا ۔جاری ہے ۔

لیکن سانپ نے دلہن کو نہیں ڈسا تھا حضرت عیس علیہ السلام نے دلہن سے دریافت فرمایا گذشہ رات تم نے کیا کیا تھا دُلہن نے جواب دیا جس وقت میرے لیے رات کا کھانا لایا گیا تو اسی وقت ایک سائل نے آکر دروازے پر دستک دی اور مدد کا سوال کیاگھر میں لوگوں کا کافی ہجوم تھا اور کسی نے بھی سائل کی آواز پر توجہ نہ دی چنانچہ میں نے خود اپنا کھانا لے جاکر سائل کو دے دیا حضرت عیسی السلام نے فرمایا ی ہوہی صدقہ تھا جس کی وجہ سے دلہن کی آئی ہوئی موت ٹل گئی ۔جاری ہے ۔

مقصد یہ کہ صدقہ دینے کی برکت سے ناگہانی بلائیں اور مصیبتیں دور ہو جاتی ہیں اور اس عمل کے عوض اللہ کرم اور فضل فرما دیتا ہے

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : Kahani

اپنا تبصرہ بھیجیں