اداکارہ ریماخان نے جب پہلی مرتبہ شہباز شریف کی توبہ توڑی تو بدلے میں کس انعام سے نوازاگیا شرمناک ترین انکشاف

میاں شہباز شریف نے بھی نہایت مختصر مدت میں کامیاب سیاسی زندگی کا طویل سفر طے کیا شریف خاندان کے قریبی ذرائع کا تو یہ بھی کہنا ہے کہ جناب نواز چشریف کی کامیابیوں کے پیچھے بھی درحقیقت شہباز شریف کا کایاں ذہن اور بروقت فیصلہ کرنے کی صلاحت کار فرما ہے۔۔جاری ہے

نواز شریف کی وزارت عظمی کے دونوں ادوار میں پنجاب کی ذمہ داری شہباز شریف نے ہی اٹھائے رکھی جن دنوں غلام حیدد وائیں وزیراعلیٰ پنجاب تھے تن بھی ہی کہا جاتا تھا ۔۔۔کہ اصل قوت شہباز شریف ہی کے ہاتھ میں ہے دوسرے دور میں تو وزارت علیا براہ راست ان کے ہاتھ میں تھی میاں شہباز شریف انتظامی حوالے سے نہایت سخت گیر رویہ رکھتے تھے وہ پاکستان کے ایسے وزیراعلٰی تھے جن کے ماتحت اکثر ان کے غیر ملکی دوروں ہر جانے کی دعائیں مانگا کرتے کیونکہ جن دنوں وہ ملک میں ہوتے افسروں کو ہمہ وقت کام میں مصروف رکھتے دن رات مضنت کرنے والا یہ مرد آہن جن تھک کر چور ہوجاتا اس کا پگلا دل ریشمی زلفوں کی چھائوں میں کسی گداز بدن کے لمس کے لیے ترسنا شروع کر دیتا اور پھر شہباز کی پرواز کسی نہ کسی پری پیکر کے نشیمن پر آرکتی اور پھر یہ بلند پرواز شہباز کبھی سازو آوازیا پھر کسی کے طلسمی حسن کا قیدی بن کر رہ جاتا ان کی تین شادیاں تو منظر عام پر آچکی ہیں ان کے حرم میں مزید کتنے چہرے ہیں نیلو کی پہلی شادی معروف بیورو کریٹ شاید رفیع سے ہوئی۔۔جاری ہے

جن سے ایک بیٹی اور دو بیٹے ہوئے لیکن وقت کی ستم ظریفی کہے کہ شاہد رفیع کے ہنستے بستے خاندان سے میاں شہباز شریف کا گذر ہوگیا اور چھوٹے میاں صاحب کو نیلو کی جنانے کون سی ادا بھاگئی کہ اسی کے ہورہے تعلقات آپ تم اور تم سے تو کا عنوان ہوئے تو راز رہا شاہد رفیع خود بھی ایک معزز خاندان سے تعلق رکھتے تجے لہذا بیوی کی بے وفائی برداشت کرسکے اور طلاق دے ۔دی جبکہ نیلو کا اس سلسلے میں کہتا ہے کہ وہ ایک باعزت گھرانے سے تعلق رکھتی ہیں ان کے بھائی کھوسہ آصف کھوسہ اہم سرکاری عہدوں پرکام کررہے ہیں وہ اپنے خانداروں کی بدنامی کاسبب نہیں بن سکتیں اس طلاق کی وجہ شہباز شریف نہیں تھے بلکہ شاہد کو گھر میں رنگیں محفلیں رویہ تھا میری بیٹی بڑی ہورہی تھی۔۔جاری ہے

میں نے شاہد کو گھر میں رنگین محفلیں سجانے سے منع کیا تو تنازعہ بڑھ گیا جوبالاخر طلا ق پر منتج ہوا بہرحال نیلو کی تمام تروضاحتوں کے باوجود ان کے خاندان سے وابستہ قریبی افراد کا کہنا ہے کہ جب خانداں والوں نے ان سے شہباز نکاح کے متعلق پوچھا اچھا تو انہوں نے نکاح کی تروید کی لیکن ان کے ساتھ انڑنیشنل فلائیتٹ دراصل ان عاشقوں کا ہنی مون ہی تھا

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news

اپنا تبصرہ بھیجیں