مردانہ کمزوری کی وجوہات

مردانہ کمزوری کی وجوہات اور اس کا مکمل اور کامیاب علاج
قدرت نے نسل انسان کی بقاءکے لئے جنسی عمل کا ذریعہ پیدا کیا ہے جس کی انجام دہی کے لئے ضروری ہے کہ مرد وہ مخصوص تناﺅ
کی صلاحیت رکھتا ہو جسے ایستادگی کا نام بھی دیا جاتا ہے۔ایستادگی کے بغیر جنسی عمل کی انجام دہی ممکن نہیں اور اسے عرف عام میں نامردی کہا جاتا ۔ اس کی متعدد وجوہات ہو سکتی ہیں جن میں سے کئی ایسی بھی ہیں کہ جنہیں آپ احتیاط کا دامن تھام کر اپنی زندگی سے دور رکھ سکتے ہیں۔ان کا احوال درج ذیل ہے۔
۔ سگریٹ نوشی: ہر قسم کے نشے سے دل کی صحت متاثر ہوتی ہے اور اس میں سگریٹ بھی شامل ہے ۔ جب دل عضاءکو خون مناسب مقدار میں فراہم نہیں کر پاتا تو نامردی ہونا یقینی بات ہے۔ ۔ زیا بیطس: اس بیماری کی وجہ سے خون میں گلوکوز کی مقدار نارمل نہیں رہتی اور عصاب بھی متاثر ہوتے ہیں جس کی وجہ سے تقریباً 50فیصد مریض نامردی کا سامناکرتے ہیں۔ 3۔ موٹاپہ: موٹے لوگ دیگر مسائل کے علاوہ کولیسٹرول کا شکار بھی ہو جاتے ہیں۔ جس کی وجہ سے خون کی روانی متاثر ہوتی ہے اور نتیجتاًنامردی پیدا ہوتی ہے۔
دیگر بیماریاں: ہائی بلڈ پریشر، اعصابی بیماریاں، ریڑھ کی ہڈی یا دماغی چوٹ ، انرائمر اور فالج بھی نامردی پیدا ہو سکتی ہے۔-۔ پیرانہ سالی عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ دل ائر دماغ کی صحت متاثر ہوتی ہے جس کی وجہ سے اعضاءکو خون کی سپلائی ماند پڑجاتی ہے۔
۔ ذہنی دباﺅ: ذہنی دباﺅنامردی کی اہم وجوہات میں سے ایک ہے۔اس سے بچنے کے لئے ورزش کریں، نیند پوری کریں اور لڑائی جھگڑے اور غصے سے بچیں۔۔ ڈپریشن یہ بیماری ذہنی دباﺅ کی شدید ترین حالت ہے اس کا اثر بھی شدید ہوتا ہے۔ ڈپریشن کی ادویات بھی نامردی پیدا کرتی ہیں  ۔ فحش بینی: فحش فلموں میں دکائے جانے والے غیر فطری اور غیر حقیقی مناظر نوجوانوں کے ذہن میں احساس کمتری اور کمزوری کا احساس پیدا کرتے ہوئے جو شدت کر کے انہیں نا مرد بنا دیتا ہے۔ ۔ گنجہ پن: ڈاکٹر مائیکل اروگ کا کہنا ہے کہ گنجے پن کی دوا فناسٹرائڈ جنسی جوش میں کمی اور نا مردی پیدا کر سکتی ہے۔ ۔ سائیڈ افیکٹ: بعض ادویات کے سائیڈ افیکٹ میں نامردی بھی شامل ہے۔ان میں بلڈ پریشر کی ادویات اینٹی ہسٹامین، ذہنی دباﺅاور ڈپریشن کی ادویات شامل ہیں۔ وہ غذائیں جو مردانہ کمزوری سے نجات دلائیں
اولاد ایک ایسی نعمت ہے جس کا کوئی نعم البدل نہیں اور اولاد سے محروم لوگ دربدر کی ٹھوکریں کھاتے پھرتے ہیں۔ ڈاکٹرز، حکماءاور پیروں، فقیروں کے پاس اولاد کے خواہش مند افراد کا تانتا بندھا رہتا ہے۔ یہ معالج انہیں مہنگے ترین ٹوٹکے بتاتے ہیں لیکن نتائج بہت کم دکھائی دیتے ہیں۔ بلاشبہ شادی شدہ افراد کے دل میں والدین بننے کی خواہش ہوتی ہے لیکن اس خواہش کی تکمیل میں ایک رکاوٹ نطفے (سپرم) کی کمی ہے۔ تو اس مسئلے سے نجات کے لیے کچھ ایسی غذائیں موجود ہیں جو نہ صرف ذائقہ کی وجہ سے لاجواب ہیں بلکہ نطفے کو پائیدار اور ان کی تعداد بڑھانے میں بھی حیرت انگیز نتائج کے حامل ہیں۔

مارچوب: وٹامن سی سے بھرپور ہری بھری ترکاری کی یہ قسم نہ صرف نطفہ (سپرم) کو خراب ہونے سے محفوظ رکھتی ہے۔ مزید برآں مارچوب کے استعمال سے انسانی جسم میں نطفوں کی تعداد بڑھانے کا عمل بھی تیز ہو جاتا ہے۔ ناشپاتی: ناشپاتی میں موجود وٹامن ای، بی6 اور فولک ایسڈ کثیرتعداد میں پایا جاتا ہے، جو نہ صرف نطفہ کی زرخیزی کو بڑھاتا ہے بلکہ اسے مضبوط بنا کر حمل ٹھہرانے کے قابل بھی بناتا ہے۔ کیلا: مختلف تحقیقات نے یہ ثابت کیا ہے کہ کیلے میں کچھ ایسے اجزاءشامل ہوتے ہیں جو سپرم (نطفہ) کی تعداد بڑھانے میں نہایت معاون ہیں۔ وٹامن بی ون، اے اور سی پر مشتمل یہ پھل قوت باہ میں اضافے کے ساتھ مباشرت کا دورانہی بھی بڑھا دیتا ہے۔ بڑا گوشت: عام طور پر ڈاکٹر اولاد کی خواہش مند شادی شدہ خواتین کو بڑے گوشت سے دور رہنا کا مشورہ دیتے ہیں لیکن معروف طبی ماہر ڈاکٹر اوز کے مطابق یہ گوشت زنک سے بھرپور ہوتا ہے اور جنسی ہارمونز کو تقویت بخش کر مباشرت کے وقت کو بڑھاتا ہے۔ لہسن: لہسن میں موجود طاقت خون کی روانی کو بڑھا دیتی ہے جس سے نطفہ کی پائیداری میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ اس میں موجود وٹامن بی 6 سپرم کو خراب ہونے سے بھی محفوظ رکھتا ہے۔ اڈارک چاکلیٹ، جینسنگ، کستورا مچھلی، انار اور اخروٹ میں موجود پروٹینز نہ صرف نطفہ کو قوت بخشتے ہیں بلکہ ان کی بڑھوتری میں بھی معاون ہیں۔ بھرپور رات گزارنے کے لئے دن میں کیا کھانا چاہیے؟ مردوں کے لئے مفید معلومات
بغیر کسی حکمت عملی کے غذا کا استعمال بالکل اسی طرح ہے، جیسے بغیر ایندھن اور بریک چیک کئے بغیر نئی کار کو سڑک پر دوڑانے کے لئے باہر لے آنا۔

کیٹاگری میں : Viral

اپنا تبصرہ بھیجیں