شادی کے تین ایسے فوائدکہ جان کرآپ کادل بھی کرےکہ فوراًشادی کرلوں

ہمارے معاشرتی نظام میں شادی ایک ایسا معاملہ ہے جسے ناگزیر قرار دیا گیا ہے ۔ اسلام بھی بلوغت کی عمر کو پہنچنے پر لڑکی اور لڑکے کی شادی کو خاص اہمیت دیتا ہے ۔ تاہم جدید محققین نے ایک ایسی ریسرچ رپورٹ جاری کر دی ہے جو شادی کے ان فوائد کو اجاگر کر دیتی ہے جن کا ادراک شاید اب تک معاشرے کے اعلیٰ تعلیم یافتہ افراد کو بھی نہیں ہے۔جدید ماہرین کا کہنا ہے

کہ شادی شدہ شخص کو خوشی اور طمانیت کا احساس ایک کنوارے انسان کی نسبت 36سے 39فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ کیونکہ ایک شادی شدہ انسان کے دل و دماغ میں کچھ خصوصی اہداف ہوتے ہیں جن کے حصول کے لئے وہ اپنے شریک حیات سے مل کر مربوط کوششیں کرتا ہے اور اکثر و بیشتر انھیں حاصل کر کے دم لیتا ہے یوں وہ اپنی اس کامیابی کر دلی اطمینان محسوس کرتا ہے اور اگلے ہدف کی جانب بڑھنے لگتا ہے۔ دوسری اہم وجہ مال و دولت کی متناسب فراوانی ہے


جس میں شادی شدہ لوگ غیر شادی شدہ لوگوں سے 10سے 40فیصد بہتر ہوتے ہیں۔ اس کی وجہ بھی وہ خاص تگ ودو ہے جس کے تحت شادی شدہ لوگ بہتر روز گار اور کاروبار کے حصول اور بچت کی بہتر منصوبہ بندیوں کے ساتھ سامنے آتے ہیں اور 50کی دہائی کو چھوتے ہی وہ اپنی باقی ماندہ زندگی اور اپنی اولاد کےلئے ایک کثیر سرمایہ جمع کر چکے ہوتے ہیں جس کی بنا پر وہ خود کو سرخرو سمجھتے ہیں۔ تیسری اہم وجہ جو شادی شدہ لوگوں کو کنواروں پر برتری دلاتی ہے وہ ہے صحت اور اوسط عمر۔ ایک شادی شدہ جوڑا ایک دوسرے کی صحت اور آرام کا خاص خیال رکھتا ہے ۔ایک دوسرے کو غیر مفید اشیاسے باز رکھنے اور صحت افزاچیزیں کھانے پینے کےلئے متحرک رکھنے کےلئے فعال کردار ادا کرتا ہے اور اس طرح وہ غیر شادی شدہ افراد سے اوسط بنیادوں پر دس سال زیادہ جیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں