مدینہ کے لوگوں میں سے ایک شخص کی بہن بیمار ہوئی تو وہ اپنی بہن کی عیادت و تیمارداری کرتا رہا پھر وہ مر گئی اس کو دفن کر دیا اور قبر میں یہی شخص

امام قرطبیؒ نے اپنی تفسیر میں حضرت عمر و بن دینار سے یہ واقعہ نقل کیا ہے کہ مدینہ کے لوگوں میں سے ایک شخص کی بہن بیمار ہوئی تو وہ اپنی بہن کی عیادت وتیمار داری کرتا رہا ، پھر وہ مرگئی تو اس کو دفن کردیا اور قبر میں یہی شخص دفن کے موقعہ پر اترا تھا اس کے پاس جیب میں دینار کی ایک تھیلی تھی وہ قبر میں گر گئی ، تو بعض لوگوں کے تعاون سے قبر کھود کر دیکھا تو قبر میں آگ دہک رہی ہے یہ اپنی ماں کے پاس آیا اور پوچھا کہ میری بہن کا عمل کیسا تھا ؟ ماں نے (جاری ہے) ہ

کہا کہ جب وہ مرچکی تو اب عمل پوچھ کرکیا کرو گے ؟ مگر جب اس نے اصرار کیا تو ماں نے بتایا کہ تیری بہن ایک تو نماز کوتاخیر کرکے پڑھتی تھی. (جاری ہے) ہ

اور دوسرے جب پڑوسی ہوجاتے ()یعنی سونے کیلئے دروازہ بند کردیتے )تو جا کر ان کے دروازہ پر کان لگا کر ان کا تجسس کرتی اور ان کی پوشیدہ باتیں معلوم کرتی تھی ۔ بھائی نے سن کر کہا کہ بس اسی نے اس کو ہلاک کیا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں