اس خاتون نے مجھے فون کر کے کہا کہ تمہاری بیٹی کی کچھ تصویریں میرے پاس ہیں لینے گئی تو مجھے رسیوں سے باندھ دیا گیا اور پھر میری آنکھوں کے سامنے میری بیٹی کو ۔ پاکستانی خاتون نے ایسا شرمناک واقعہ سنا دیا کہ جان کر شیطان بھی گھبرا جائے

مہر آباد میاں چنوں کی رہائشی خاتون نسرین اختر زوجہ محمد اشرف نے تھانہ صدر میاں چنوں کو درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ اس کی بیٹی تہمینہ کو ہمارے دور کی رشتہ دار عاصمہ بی بی نے فون کر کے کہا کہ اس کی کچھ تصویریں اس کے پاس ہیں آکر لے جائیں جس پر میں اپنی بیٹی کو لے کر ان کے گھر 135 سولہ ایل گئی جہاں پر پہلے سے موجود ملزم ندیم اور ریاض نے مجھے زبردستی پکڑکر رسیوں سے باندھ دیا ۔جاری ہے ۔

اور میری بیٹی کو دوسرے کمرے میں لے جا کر ندیم نے زیادتی کی اور ریاض نے ویڈیو بنائی اس دوران عاصمہ دروازے میں کھڑی پہرہ دیتی رہی تلاش کرتے ہوئے میرا خاوند محمد اشرف اور اعجاز موقع پر پہنچ گئے اور مجھے رسیوں سے آزاد کرایا ۔جاری ہے ۔

اور میری بیٹی کو بے ہوشی کی حالت میں میاں چنوں لے آئے عاصمہ ، ریاض اور ندیم نے بعد میں فون پر دھمکی دی کہ اگر انہوں نے پولیس کو واقعہ کے بارے میں بتایا تو ہم ویڈیو نیٹ پر ڈال دیں گے ۔ نسرین اختر کی درخواست پر تھانہ صدر پولیس نے ملزموں کے خلاف مقدمہ نمبر 191/17 بجرم 376392 ت پ درج کر لیا تاہم ملزم گرفتار نہ ہو سکے ہیں۔

کیٹاگری میں : news

اپنا تبصرہ بھیجیں