.جادو اور جنات بارے حیرت انگیزمعلومات جو آپ کو آج سے پہلے معلوم نہیں ہونگی

آج کل فلموں ٗ ڈراموں میں جادو اور جنات کو ایک مخصوص انداز میں پیش کیا جاتاہے۔ فلموں ٗڈراموں اور کہانیوں کا ہی کمال ہے کہ ہم میں سے اکثر اس بات کے حامی ہوں گے کہ جنات انسانوں میں حلول کر کے ان سے عجیب و غریب حرکات کرواتے ہیں ۔ حدیث میں بھی ہے کہ شیطان انسان کی رگوں میں خون کی طرح دوڑتا ہے لیکن حلول کرنے کا جو تصور ان فلموں میں عکس بند کر کے دکھایا جاتا ہے وہ مبالغہ اور جھوٹ ہے۔ جادو کی تعریف: اگر اللہ تعالیٰ کے طرف سے ہماری سوچاور نظریات میں محسوس یا غیر محسوس طریقے سے کوئی تبدیلی ہو۔جاری ہے ۔

تو اسے ہدایت کہیں گے لیکن اگر اس کے برعکس کسی بھی سطح پر کفر کے حق میں محسوس یا غیر محسوس طریقے سے ہمارے نظریات اور بالآخر ہمارے افعال کی تبدیلی یا تبدیلی کی کوشش جادو کہلائے گی۔ جادو کی اقسام: جادو اپنی قسم میں ایک ہی ہے کیونکہ اس کی ہر قسم میں نتائج غیر محسوس طریقوں سے ہی رونما ہوتے ہیں لیکن پہچان کے لئے اسے دو سادہ مگر بڑی اقسام میں تقسیم کیا جاتاہے۔ اس کی ایک قسم وہ ہے جس میں منتر پڑھے جاتے ہیں اور منتر پڑھنے کے کام میں انسان بھی جنات کی مدد کے لئے۔جاری ہے ۔

اپنی نیت اور ایمان کا حصہ ڈالتے ہیں۔ جو قسم باقاعدہ منتر کے ساتھ ہوتی ہے اسے بامنتر جادو کہتے ہیں جبکہ دوسری قسم کا جادو جنات ہم پر بے منتر کرتے ہیں‘ اسے بے منتر جادو کہتے ہیں۔ حیرت کی بات ہے کہ اشرف المخلوق ہوتے ہوئے بھی جادو کاخوف ہمیں کپکپا دیتاہے۔ جادو کا اصل مقصد کیاہوتاہے: اللہ یا بندوں میں سے کسی کے حقوق کوغصب کرنا ہی جادو کرنے یا کروانے والے کا مقصد ہوتاہے۔