دبئی کے ساحل پر غیرملکی لڑکا لڑکی کی ایسی شرمناک ترین حرکت کہ ملک سے ہی نکال دیا گیا، کبھی دبئی جائیں تو غلطی سے بھی۔۔۔۔اور وہ کس ملک کے تھے رپورٹ

دبئی میں مقیم ایک جاپانی جوڑا ساحل سمندر پر گاڑی میں جنسی عمل میں مشغول رنگے ہاتھوں پکڑا گیا۔ جب انہیں گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا تو انہوں نے ایسی بے دلیل بات کہہ دی کہ جج بھی حیران رہ گیا۔۔جاری ہے۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق یہ جوڑا اپنی کار میں مکمل برہنہ حالت میں جنسی عمل میں مصروف تھا کہ ایک آف ڈیوٹی پولیس آفیسر نے انہیں رنگے ہاتھوں پکڑ لیا اور پولیس کنٹرول روم میں اطلاع دے دی، جس پر آن ڈیوٹی پولیس آفیسرز آئے اور انہیں گرفتار کرکے لے گئے۔ان کے خلاف شادی کے بغیر جنسی تعلق قائم کرنے اور شراب پینے کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کیا گیا جہاں اس جوڑے نے حیران کن بات کہہ دی۔ انہوں نے کہا کہ ”ہم نے ایک ہوٹل میں کھانا کھایا تھا جس کے بعد ہماری طبیعت خراب ہو گئی اور ہمیں قے آنے لگی۔۔جاری ہے۔

اس پر ہم نے گاڑی ساحل سمندر کی طرف موڑ دی اور وہاں گاڑی میں اس لیے برہنہ ہوئے کہ قے کرتے ہوئے ہمارے کپڑے خراب نہ ہو۔ اس سے جنسی تعلق استوار کرنا ہمارا مقصد نہیں تھا۔ تاہم جج ان کی اس دلیل سے مطمئن نہ ہوا اور ان پر الزامات ثابت ہونے پر انہیں ایک ماہ معطل قید کی سزا اور بعدازاں ملک بدر کرنے کی سزا سنا دی۔

کیٹاگری میں : news