ایک نئی نویلی دولہن اور کھیتوں میں کسان ایک نیاشادی شدہ جوڑا شام کی سیر کے لئے قریبی گائوں کی طرف نکلا دونوں میاں بیوی ٹھنڈی ہوا میں سرسبنر لہلہاتی فصلوں کو دیکھ دیکھ کر لطف اندوز ہورہے تھے اچانک خاتون نے

ایک نیا شادی شدہ جوڑا شام کی سیر کے لئے قریبی گاؤں کی طرف نکلا۔۔دونوں میاں بیوی ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا میں سر سبز لہلہاتی فصلوں کو دیکھ دیکھ کر لطف اندوز ہو رہے تھے۔ اچانک خاتون نےایک کھیت میں ایک کسان کو دیکھا جس نے زمین میں ہل چلانے کے لئے ایک بیل کے ساتھ ایک گائے کو بھی جوت رکھا تھا۔۔۔جاری ہے ۔

خاتون اس ظلم پر بہت سٹپٹائی۔ اورغصے میں اپنے شوہر سے پوچھنے لگی، بھلا یہ کیا بات ہوئی، اب گائے ہل بھی چلایا کرے گی؟شوہر نے کہا : “ارے بیگم کیا ہوا، جانور ہیں انھیں کیا فرق پڑتا ہے۔۔”خاتون نے اسی گرمجوشی سے کہا : “چاہے جانور ہی کیوں نہ ہو ، ہے تو صنفِ نازک ہی، دودھ دیتی ہے، بچے پیدا کرتی ہے،۔۔جاری ہے ۔

اس کے باوجود بھی اس سے باربرداری اور مشقت لی جا رہی ہے، یہ کہاں کا انصاف ہے؟”شوہر کچھ دیر خاموش بیٹھا سر کھجاتا رہا پھر ذرا دھیمے لہجے میں بولا:”بیگم تمہیں کیا علم، یہ بھی تو ہو سکتا ہے کہ یہ ایک لبرل سیکولر گائے ہو اور بیل کی برابری کرنا چاہتی ہو۔۔۔”

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔