مجھے اس جگہ ملنے آئو کیونکہ لڑکے نے اپنی گرل فرینڈ اکیلی کو بلا اور دوستوں کی ساتھ ایس حرکت کردی کہ

بھارت کے شہر چندی گڑھ سے تعلق رکھنے والے ایک طالبعلم نے بے حیائی اور بدکرداری کی ایسی بھیانک مثال قائم کردی ہے کہ جس کا تصور کرکے ہی انسان کے رونگٹے کھڑے ہوجائیں۔ گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق شیطان صفت طالبعلم نے ایک ساتھی طالبہ سے تعلق استوار کررکھا تھا لیکن جب لڑکی نے شادی پر اصرار شروع کردیا۔جاری ہے ۔

تو وہ جان چھڑوانے کے لئے منصوبہ بندی کرنے لگا۔ اس بدبخت کو صاف انکار کرنے کی ہمت نہ ہوئی تو اپنے دو دوستوں سے لڑکی کی عصمت دری کروا ڈالی تاکہ شادی سے انکار کرنے کا بہانہ ہاتھ آجائے۔متاثرہ لڑکی نے پولیس کو بتایا کہ اس کے بوائے فرینڈ ہرپیت سنگھ عرف ہیپی کے کہنے پر ہی دو اشخاص نے اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ لڑکی کی عمر 19 سال ہے اور وہ ہرپیت کی کلاس فیلو ہے۔ اس نے پولیس کو بتایا کہ ہرپیت نے اسے 20جولائی کے روز اپنے والدین سے ملانے کے بہانے بلوایا۔۔جاری ہے ۔

وہ اسے ایک فلیٹ میں لے کر گیا جہاں اس کے دو دوست موجود تھے۔ وہ دونوں اسے اپنے ساتھ زبردستی لے گئے اور ایک کھیت میں واقع ٹیوب ویل کے ساتھ بنے کمرے میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنایا۔ بعدازاں دونوں بدقماش نوجوان اسے ایک گھر میں لے کر گئے اور وہاں دوبارہ زیادتی کا نشانہ بنایا۔۔جاری ہے ۔


پولیس نے لڑکی کی شکایت پر ہرپیت سنگھ اور اس کے دوستوں بندو اور روی کو اجتماعی زیادتی کے الزامات میں گرفتار کرلیا ہے۔ تینوں کا تعلق ضلع جالندھر کے گاﺅں تالواں سے ہے۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔

کیٹاگری میں : Viral