پاکستانی نوجوان کی شادی دلہن سے ملنے کمرے میں گیا تو وہاں ایسا منظر کہ واقعی پیروں تلے زمین نکل گئی کمرے میں ہرطرف

نئی نویلی دلہن نے خود کو گولی مار کر خود کشی کرلی۔ لڑکی کی عمر 18 سال اور دو ماہ قبل اس کی شادی ہوئی تھی،۔۔جاری ہے

بتایا جاتا ہے ظفر وال کے نواحی گاﺅں کے رہائشی محمد افضل کی جواں سالہ بیٹی عائشہ کی شادی دو ماہ قبل قصبہ لیسر میں ہوئی تھی جو گھریلو جھگڑے کی وجہ سے میکے آئی ہوئی تھی۔۔جاری ہے

مقتولہ کا خاوند اور اس کی ساس اپنی بہو کو لینے اس کے میکے لیسر لینے گئے تھے کہ گھریلو ناچاکی کی وجہ سے عائشہ نے کمرے میں جاکر خود کو سر میں گولی مار کر خود کشی کرلی۔۔جاری ہے

پولیس تھانہ لیسر نے باڈی کو اپنے قبضہ لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے ڈی ایچ کیو روانہ کردیا ۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news