پاکستانی قانون کے مطابق سزائے موت پانے کے بعد کتنی دیر تک مجرم کی لاش کو اسی طرح لٹکتی رہنا ضروری ہے؟ جواب جان کر آپ بھی واقعی کانپ اٹھیں گے

پاکستانی قانون کے مطابق جرم کی نوعیت کے حساب سے مختلف سزائیں ہیں اور سب سے بڑ ی سزا سزائے موت ہے ، اس پر بین الاقوامی دباﺅ کے باعث پابندی لگا دی گئی تھی لیکن سانحہ پشاور کے بعد سابق وزیراعظم نوازشریف نے پابندی ہٹانے کا اعلان کیا تھا ۔۔جاری ہے ۔

جس کے بعد کالعدم تنظیم کے دہشتگردوں کو تختہ دار پر لٹکانے کا عمل شروع کیا گیا اور جو کہ تاحال جاری ہے۔تفصیلات کے مطابق سانحہ پشاور میں دہشتگردوں نے معصوم بچوں کو نشانہ بنایا۔۔جاری ہے ۔

جس میں ٹیچرز سمیت 141معصوم بچے شہید ہوئے جس کے بعد ملک میں بڑے پیمانے پر دہشتگردوں کا قلع قمع کرنے کیلئے پلان بھی مرتب کیا گیا اور پاک فوج دہشتگردوں کے خلاف کارروائیوں میں تیزی لے آئی ،پاک فوج کی قربانیوں کے باعث پاکستان سے دہشتگردوں کا مکمل طور پر خاتمہ ہو چکاہے ۔۔۔جاری ہے ۔

پاکستان کے قانون کے مطابق سزائے موت پانے والوں کو 30منٹ تک تختہ دار پر لٹکایا جاتاہے جبکہ مجرم کی موت صرف تین منٹ میں ہی واقع ہو جاتی ہے لیکن قانون کے مطابق اسے تیس منٹ تک لٹکا کر رکھا جاتاہے ۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news