مفتی عبدالقوی کے موبائل سے 40 ٹوٹے نکل آئے یہ کون سے اورکس کس کے ٹوٹے ہیں جان کر ہر پاکستانی توبہ توبہ ضرور کرے گا

قندیل بلوچ قتل کیس میں گرفتار مفتی عبدالقوی کی پولی گرافک ٹیسٹ کی رپورٹ میں یہ تو بتا ہی دیا گیا ہے کہ وہ جھوٹ بولے رہے ہیں مگر اب ان کے موبائل فون سے 40 ”ٹوٹے“ برآمد ہونے کی اطلاعات بھی موصول ہو رہی ہیں۔۔جاری ہے۔

معروف صحافی نے فیس بک پر جاری ویڈیو پیغام میں بتایا کہ غیر مصدقہ ذرائع کے مطابق تفتیش کے دوران مفتی عبدالقوی کے موبائل سے چالیس ’ٹوٹے‘ (ویڈیو کلپس) بھی برآمد ہوئے ہیں اور یہ اندازہ لگانا بھی مشکل نہیں ہے کہ یہ ”ٹوٹے“ کس نوعیت کے ہوں گے۔ اس معاملے پر سوشل میڈیا پر بھی خوب بحث جاری ہے اور لوگ مختلف رائے کا اظہار کر رہے ہیں۔۔جاری ہے۔


ایک جانب لوگ ایک عالم دین اور سکالر کے موبائل سے ”ٹوٹے“ برآمد ہونے پر کچھ ”پریشان“ دکھائی دیتے ہیں اور غم و غصے کا اظہار کر رہے ہیں تو دوسری جانب بہت سے لوگ اس رائے کا اظہار بھی کر رہے ہیں کہ اگر ایسا کچھ برآمد بھی ہوا ہے تو یہ ان کا ذاتی مئلہ ہے اور ان ”ٹوٹوں” کی برآمدگی کا قندیل بلوچ قتل کیس کیساتھ کوئی تعلق نہیں ہے جس میں وہ زیر تفتیش ہیں۔۔جاری ہے۔


قانونی ماہرین کے مطابق اگر مفتی عبدالقوی کے موبائل سے برآمد ہونے والے ٹوٹے ”سینٹ آئٹمز“ میں بھی موجود ہیں، یعنی انہوں نے کسی کو بھیج بھی رکھے ہیں تو ان کیخلاف تعزیرات پاکستان میں موجود فحش مواد پھیلانے کے قانون کے تحت کارروائی ہو سکتی ہے۔واضح رہے کہ مفتی عبدالقوی کو پولی گرافک ٹیسٹ کیلئے لاہور کے علاقے ٹھوکر نیاز بیگ پر واقع لیبارٹری لایا گیا تھا جہاں ان کا 6گھنٹے تک پولی گرافک ٹیسٹ جاری رہا۔جاری ہے۔

جس کے بعد پولیس اہلکار انہیں ملتان واپس لے گئے۔ اس ٹیسٹ کی جاری ہونے والی رپورٹ میں کہا گیا کہ مفتی عبدالقوی کی جانب سےپولیس کو دیئے گئے بیانات اور ٹیسٹ میں 95فیصد باتیں متضاد ہیں اور وہ بیان جھوٹ پر مبنی ہے۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news