ایک شخص روز قبرستان کے دروازے پر کھڑا ہو جاتا اور ایک دعا پڑھتا ایک دن

حضرت بشربن منصور سے روایت ہے کہ ایک شخص روز قبرستان جایا کرتا تھا اور جنازوں میں شرکت کیا کرتا تھا جب شام ہوتی تو قبرستان کے دروازے پر کھڑا ہو کر کہتا تھا۔جاری ہے ۔

تمہاری وحشت کو انسیت سے بدل دے تمہاری تہنائی رحم کرے تمہارے گناہ سے درگزار کرے اورتمہاری نیکوں کا اجر تمہیں عطا کرے ۔۔۔ان جلموں سے زیادہ کچھ نہ کہتا اس شخص کا بیان ہے کہ ایک رات میں قبروں پر نہ جاسکا اور گھر واپس آگیا ۔جب میں سونے لگا تو اچانک ایک جماعت میرے پاس آئی میں انہیں دیکھ کر حیران رہ گیا۔جاری ہے ۔

اورپوچھنے لگا کون ہو تم اور کیا چاہتے ہو انہوں نے جواب دیا ہم قبرستان کے مردے ہیں تو نے ہمیں اس ہدیہ کا عادی بنایا ہے جو تو قبرستان کے دروازے  پر کھڑا ہو کر دعا کیا کرتا تھا آج وہ ہدیہ ہم کو نہیں ملا اس لیے ہم یہاں آئے ہیں اس شخص کا بیان ہے۔جاری ہے ۔

کہ میں نے اُن مردوں سے وعدی کیا کہ میں برابر حاضر ہوکر دعا کرتا رہوں گا اور میں زندگی بھر اس وعدے پر قائم رہا

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔