سچی محبت نہ جسمانی ہوتی ہے نہ رومانی وہ بہت مصروف صبح تھی کہ سوا آٹھ بجے کے قریبایک بوڑھا شخص جو 80 سال کا ہوگا اپنے انگوٹھے کے ٹانکے نکلوانے آیا. اسے 9 بجے کا وقت دیا گیا تھامگر! وہ جلدی میں تھا کہ اسے 9 بجے کہیں اور پہنچنا تھا. میں نے اہم معلومات لیں اور اسے بیٹھنے کیلئے کہاکیونکہ اس کی باری آنے میں ایک گھنٹہ سے ذیادہ لگ جانے کا اندازہ تھا. میں نے اہم

وہ بہت مصروف صبح تھی کہ سوا آٹھ بجے کے قریبایک بوڑھا شخص جو 80 سال کا ہوگا اپنے انگوٹھے کے ٹانکے نکلوانے آیا. اسے 9 بجے کا وقت دیا گیا تھا۔جاری ہے


مگر! وہ جلدی میں تھا کہ اسے 9 بجے کہیں اور پہنچنا تھا. میں نے اہم معلومات لیں اور اسے بیٹھنے کیلئے کہاکیونکہ اس کی باری آنے میں ایک گھنٹہ سے ذیادہ لگ جانے کا اندازہ تھا. میں نے دیکھا کہ وہ بار بار گھڑی پر نظر ڈال رہا ہے اور پریشان لگتا ہے.اس بزرگ کی پریشانی کا خیال کرتے ہوئے میں نے خود اسکے زخم کا معائنہ کیا تو زخم مندمل ہوا دیکھ کر اس کے ٹانکے نکال کر پٹی کردی.اسی اثناء میں میں نے بزرگ سے پوچھا کہ کیا اسے کسی اور ڈاکٹر نے 9 بجے کا وقت دیا ہوا ہے کہ وہ اتنی جلدی میں ہے؟ وہ بولا کہ اس نے ایک نرسنگ ہوم جانا ہے۔جاری ہے

جہاں اس نے 9 بجے اپنی بیوی کے ساتھ ناشتہ کرنا ہے.اس پر میں نے بزرگ سے انکی بیوی کی صحت کے بارے میں پوچھا تو بزرگ نے بتایا کہ اسکی بیوی الزائمر بیماری کا شکار ہونے کے کچھ عرصے کے بعد سے نرسنگ ہوم میں ہے.میں نے پوچھا کہ “اگر وہ وقت پر نہ پہنچے تو اسکی بیوی ناراض ہوگی؟”بزرگ نے جواب دیا … وہ تو پچھلے 5 سال سے مجھے پہچانتی بھی نہیں ہے.میں نے حیران ہو کر پوچھا “اور آپ اس کے باوجود ہر صبح اپنی بیوی کے ساتھ ناشتہ کرتے ہیں، حالانکہ وہ پہچانتی بھی نہیں کہ آپ کون ہیں؟بزرگ نے مسکرا کر جواب دیا …۔جاری ہے

“درست کہ وہ مجھے نہیں جانتی مگر میں تو اسے جانتا ہوں کہ وہ کون ہے.”یہ سن کر میں نے بڑی مشکل سے اپنے آنسو روکے گو میرا کلیجہ منہ کو آرہا تھا یہ ہے

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔

کیٹاگری میں : Kahani