جوان لڑکیاں ہمارے پاس فحش لباس میں آئیں اور خوب مزہ کریں سعودی حکومت نے شرمناک کام کا آغاز کردیا

سعودی عرب کے شہزادے محمد بن سلمان نے اعلان کیا ہے کہ سعودیہ میں جلد ہی سمندر کنارے ایک تفریح گاہ بنائی جائیگی. اس جگہ پر دنیا کی سب سے بہترین سہولیات میسر ہوگیں اور ہر ملک کے لوگ یہاں پر اپنی چھٹیاں منانے آسکتے ہیں.۔۔جاری ہے۔

سمندر کنارے بننے والی اس سیر گاہ کی خصوصیت یہ ہے کہ یہاں پر خواتین سرعام فحش کپڑے پہن سکتی ہیں اور سمندر کا لطف اٹھا سکتی ہیں. اسکے علاوہ غیر شادی شدہ جوڑے بھی یہاں پر آکر اپنی چھٹیاں بہترین طریقے سے گزار سکتے ہیں.سعودی حکومت کا کہنا ہے کہ سعودی عرب میں پہلے سے ہی سمندر کنارے تفریح گاہے موجود ہیں جہاں پر روزانہ ہزاروں سعودی تفریح کے لیے جاتے ہیں لیکن وہاں پر آئی خواتین صرف برقے میں دکھائی دیتی ہیں اور مرد خضرات مکمل کپڑوں میں، جسکی وجہ سے یورپ، برطانیہ، اور امریکا جیسے ملکوں سے آئے انگریز سیاح اپنے من چاہے کپڑوں میں سمندر کنارے چھٹیاں نہیں گزار سکتے.۔۔جاری ہے۔

یہ نئی بننے والی تفریح گاہ جسے Red Sea Resort کا نام دیا گیا ہے اس پر کام ٢٠١٩ میں شروع کیا جائیگا اور ٢٠٢٢ تک یہ مکمل طور پر تیار ہو جائیگا. شہزادہ سلمان نے دعوا کیا ہے کے اس سیرگاہ کا شمار دنیا کی بہترین سیر گاہوں کی فہرست میں شامل ہوگا جہاں پر دنیا بھر سے آئے لوگ اپنے مرضی کے کپڑے پہن سکتے ہیں اور کھلے۔۔جاری ہے۔

عام جو کرنا چاہیں کر سکتے ہیں. یہاں پر آئی خواتین اور جوان لڑکیوں پر کسی قسم کی پابندی نہیں ہو گی. لڑکیاں کھلے عام بکنی پہن سکتی ہیں اور تمام طرح کے فحش کام کھلے طریقے سے کیے جاسکے گیں.

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول  کریں۔ ↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news