7 درندوں کی نشہ پلا کر 14 سالہ لڑکی سے اجتماعی زیادتی

سات مسلح افراد نے اسلحہ کے زور پر معصوم بچیوں کو اغواءکرلیا، بڑی کو نشہ آور ادویات پلا کر ہوس کا نشانہ بناتے رہے جبکہ چھوٹی کے جسم کے مختلف حصوں کو سگریٹ جلا کر تشدد کا نشانہ بناتے رہے،۔(جاری ہے) ہ

چھوٹی لڑکی فرار ہونے میں کامیاب، بڑی بذریعہ پولیس برآمد ایف آئی آر درج ہونے کے باوجود پولیس ملزمان کے خلاف کارروائی سے گریزاں۔روزنامہ خبریں کے مطابق تھانہ صدر کے علاقہ 165 ای بی کی رہائشی رمشہ بی بی زوجہناظر حسین نے بتایا کہ اس کی بہنوں 14 سالہ (ع) اور 9 سالہ شانزہ کو اڈا 165 ای بی سے سات ملزمان اسلحہ کے زو رپر کیری ڈبہ میں اغوا کرکے لے گئے۔ ملزمان دونوں بچیوں کو پہلے کبیر اور پھر لاہور کے کسی مقام پر لے جا کر 14 سالہ (ع) کو نشہ آور ادویات کھلا کر زیادتی کا نشانہ بناتے رہے جبکہ 9سالہ (ش) کے جسم کے مختلف حصوں پر سگریٹ جلا کر تشدد کا نشانہ بناتے رہے جو درندگی کا منہ بولتا ثبوت ہے 16دن تک ملزمان کی حراست میں رہنے کے بعد 9 سالہ (ش) فرار ہونے میں کامیاب ہوگئی۔۔(جاری ہے) ہ

رمشہ بی بی نے بتایا کہ میری والدہ کے دن رات تھانہ کے چکر لگانے پر پولیس تھانہ صدر عارفوالہ نے میری دوسری بہن کو ملزمان سے بازیاب کرانے کے بعد ایف آئی آر تو درج کرلی مگر پولیس ملزمان کے خلاف کارروائی سے گریزاں ہے۔ پولیس کارروائی کی مد میں رشوت کی وصولی کے باوجودملزمان کے ساتھ ساز باز ہوکر ایف آئی آر واپس لینے کیلئے دباﺅ ڈال رہی ہے جبکہ ملزمان بااثرہیں اور ہمیں قتل اغواءسمیت سنگین مقدمات میں پھنسانے کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔۔(جاری ہے) ہ


متاثرہ خاندان نے شدید احتجاج کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان، چیف جسٹس آف لاہور ہائی کورٹ، وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب، آر پی او ساہیوال ودیگر متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں قرار واقع سزا دی جائے تاکہ مستقبل میں کوئی درندہ ایسے گھناﺅنے فعل کی کوشش نہ کرے اور ہمیں انصاف اور تحفظ فراہم کیا جائے۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news