چاہ بہار بندرگاہ نے پاکستان کو پہلا جھٹکا دے ڈالا، بھارت کی پاکستان پر ایسی برتری جس کا کبھی مداوا نہیں ہو سکے گا

پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن (پنجاب) کے سابق چےئرمین چوہدری افتخار مٹو، سابق چےئرمین میاں ریاض احمد و سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی ممبر عاطف عبدالغفار نے کہا ہےجاری ہے

کہ حکومت کی ناقص ایکسپورٹ پالیسیوں کیوجہ سے بھارت نے پاکستان کو افغانستان کی منڈی میں بھی مات دے دی ہے ۔بھارت نے چاہ بہار بندرگاہ پر 1 لاکھ10 ہزار ٹن گندم پہنچا دی ہےجہاں سے وہ گندم زمینی راستے افغانستان ایکسپورٹ کی جائے گی ۔ یہ بات انہوں نے گزشتہ روز اپنے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے اس وقت بھی صرف پنجاب میں پچھلے 3سالوں سے تقریباً 37 لاکھ ٹن گندم کے فاضل ذخائر موجود ہیں جبکہ نئی گندم کی فصل کی آئندہ چند روز میں خریداری شروع ہو جائے گی ۔جاری ہے

انہوں نے کہاکہ حکومت کو چاہیے کہ گندم کے نرخ انٹر نیشنل مارکیٹ میں گندم کے نرخوں کے برابر مقرر کرتی اس سے عوام کو بھی سستا آٹا دستیاب ہوتا اور ایکسپورٹر کو بھی فاضل گندم ایکسپورٹ کرنے میں آسانی ہوتی جس سے خود حکومت کو اربوں روپے کی سبسڈی دینے کی ضرورت ہی پیش نہ آتی ۔انہوں نے کہاکہ اس وقت ایک ہی ملک میں گندم کے دو طرح کے ریٹ چل رہے ہیں سندھ اور پنجاب کی گندم کی قیمتوں میں نمایاں فرق موجود ہے ۔جاری ہے

انہوں نے کہاکہ پاکستان میں گندم کی قیمت عالمی منڈ ی میں گندم کی قیمتوں سے کہیں زیادہ ہونے کی وجہ سے ہماری روایتی مارکیٹ افغانستان پر روس کی وسطی ریاستوں اور بھارت نے اپنا قبضہ جما لیا ہے، جبکہ ہمارے حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے پاکستانی عوام مہنگا آٹا کھانے پر مجبور ہیں ۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news