جب میں اٹک جیل میں اپنے والد سے ملنے جاتی تھی تو سزائے موت کے مجرموں کو میرے اور میری والدہ کے ساتھ بٹھا دیا جتا تھا کیونکہ مریم نواز نے ایسا انکشاف کردیا کہ سن کر آپ کی روح کانپ جائے گی

مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما مریم نواز نے انکشاف کیا ہے کہ جب جنرل مشرف نے منتخب جمہو ری حکومت پر قبضہ کر کے نواز شریف کو اٹک جیل میں بند کردیا تھا۔جاری ہے

تو میں جب اپنے قید والد کو اٹک جیل میںملنے کیلئے آتی تھی تو سزائے موت کے قیدیوں کو کال کوٹھریوں سے نکال کربیڑیوں سمیت میرے اور میری والدہ کے ساتھ بٹھادیا جاتا ہےتفصیلات کے مطابق اٹک میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے مر یم نواز نے کہا کہ نواز شریف نے اس وقت بھی عوام سے محبت کی سزا بھگتی تھی جب مشرف نے جرنیلوں کے ساتھ ملکر اوورٹیک کیا تھا اور اب بھی وہ عدالتوں میں روزے کی حالت میںچار چار گھنٹے کھڑے ہوکر عوام سے محبت کی سزا بھگت رہے ہیں۔۔جاری ہے

انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف پانامہ پر درجنوں پیشیاں بھگت چکے ہیں لیکن جن چار سو لوگوں کا نام پانامہ میں موجود تھا ان کو کسی نے نہیں بلایا اورنہ ہی انہوں نے ایک پیشی بھی بھگتی۔ مر یم نواز نے کہا کہ کبھی کسی نے آج تک اپنے بیٹے سے بھی تنخواہ لی ہے ! لیکن نواز شریف پر کرپشن کا مقدمہ بنایا اور ان پر ایک پائی کی کرپشن بھی ثابت نہیں ہوئی لیکن پھر بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نکال دیا گیا۔۔جاری ہے

اس کے باوجود عوام کی نواز شریف سے محبت کم نہیں ہوئی۔انہوں نے کہا کہ جب کلثوم نواز نے الیکشن لڑا تو کئی لیگی کارکنوں کو کالے کپڑوں میں لپیٹ کر غائب کردیا جوکو پولنگ کے بعد چھوڑا گیا۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news

اپنا تبصرہ بھیجیں