گنجے پن کی ادویات کا استعمال، مردوں کو جنسی کمزوری کا شکار بنائے

گنجے پن کا شکار افراد احاس کمتری کا شکار رہتے ہیں اور اسی لئے وہ اس مسئلے سے نجات کیلئے طرح طرح کی ادویات استعمال کرتے ہیں مگر یہ ادویات انہیں گنجے پن سے زیادہ گھبمیر مسائل میں مبتلا کر دیتی ہیں۔۔۔جاری ہے

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام ہیلتھ ڈیسک کے مطابق یونیورسٹی فین برگ اسکول آف میڈیسن کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گنجے پن کی ادویات استعمال کرنے سے مرد جنسی کمزوری کا شکار بن جاتے ہیں۔ماہرین کے مطابق ان ادویات کا استعمال مردوں کو بہت زیادہ جنسی کمزوری کا شکار بنا دیتا ہے اور ان پر ویاگرا جیسی طاقتور جنسی دوا بھی اثر نہیں کرتی۔اس حوالے سے 11 ہزار افراد پر ایک تحقیق کی گئی جس سے اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ گنج پن کی دوا استعمال کرنے کے بعد مرد تقریبا 4 سال تک مردانہ کمزوری کا شکار رہتے ہیں۔۔۔جاری ہے

ماہرین کے مطابق گنج پن کی وجہ مردوں کا جنسی ہارمون سسٹم ٹیسٹاسٹرون ہوتا ہے جبکہ گنجے پن کی ادویات میں فائنا اسٹیرائیڈ اور ڈٰوٹا اسٹیرائیڈ پائے جاتے ہیں جو جو ٹیسٹا سٹرون پر منفی اثر ڈالتے ہیں۔ان ادویات کے استعمال سے گنج پن میں کچھ افاقہ ہوجاتا ہے مگر ٹیسٹا سٹرون کم ہونے کی وجہ سے مردانہ کمزوری پیدا ہوجاتی ہے اور ویاگرا بھی بے اثر ہو جاتی ہے۔تحقیق کے سربراہ ڈاکٹر اسٹیون کا کہنا ہے کہ فائنا اسٹیرائیڈ جیسے اجزا کی حامل ادویات مردوں کی جنسی صحت کیلئے شوگر، بلڈ پریشر اور سگریٹ نوشی سے بھی کہیں زیادہ خطرناک ہے۔۔۔جاری ہے

ان ادویات کے اثرات کئی سالوں تک رہتے ہیں جس کی وجہ سے مرد ازدواجی فرائض کی ادائیگی میں بھی ناکام رہتے ہیں۔

مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

اپنا تبصرہ بھیجیں